ترکی کی رکنیت پر کوئی سوالیہ نشان نہیں ہے، نیٹو
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات اگست

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:52:56 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:52:56 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:52:56 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:52:19 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:52:19 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:52:19 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:51:14 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:51:14 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:51:14 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:50:26 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:50:26
پچھلی خبریں - مزید خبریں

ترکی کی رکنیت پر کوئی سوالیہ نشان نہیں ہے، نیٹو

نیٹو(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 اگست ۔2016ء)مغربی دفاعی اتحاد نیٹو کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ناکام فوجی بغاوت کے بعد انقرہ حکومت کے اقدامات کے باجود نیٹو میں ترکی کی رکنیت پر کوئی سوال نہیں اٹھتا۔ میڈیارپورٹس کے مطابق نیٹو کی خاتون ترجمان اوآنا لوجیسکو کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ترکی کی نیٹو میں رکنیت پر کوئی سوالیہ نشان نہیں ہے۔ یہ بیان بعض فرضی میڈیا رپورٹیں سامنے آنے کے بعد جاری کیا گیا ہے۔ لوجیسکو کے بیان کے مطابق نیٹو ترکی کے کردار کی قدر کرتا ہے۔ یہ بیان ترک صدر رجب طیب ایردوآن کے دورہ ماسکو کے ایک روز بعد سامنے آیا ہے۔
11/08/2016 - 11:52:19 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان