قومی ادارہ برائے انسدادِ دہشت گردی کے درست انداز میں کام نہ کرنے کی وجہ افسران ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات اگست

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:37:16 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:36:24 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:35:12 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:30:00 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:27:28 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:21:57 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:16:52 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:15:27 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:15:27 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:15:27 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 11:14:42
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

قومی ادارہ برائے انسدادِ دہشت گردی کے درست انداز میں کام نہ کرنے کی وجہ افسران کی نااہلی نہیں، بلکہ حکومت کی عدم توجہ ہے۔قوانین کے مطابق سال میں چار مرتبہ بورڈ آف گورنرز کا اجلاس ہوتا ہے، لیکن بدقسمتی سےاب تک ایک اجلاس بھی نہیں ہوسکا۔بورڈ کے اجلاس کے لیے فائل وزارتِ داخلہ کو ارسال کی جو وزیراعظم ہاوس بھجوائی گئی وہاں سے اب تک کوئی جواب نہیں آیا:نیکٹا کے سربراہ احسان غنی کی گفتگو

اسلام آباد(اردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔ 11 اگست۔2016ء) قومی ادارہ برائے انسدادِ دہشت گردی (نیکٹا) کے سربراہ احسان غنی نے واضح کیا ہے کہ ادارے کے درست انداز میں کام نہ کرنے کی وجہ افسران کی نااہلی نہیں، بلکہ حکومت کی عدم توجہ ہے۔نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے نیکٹا کے سربراہ کا کہنا تھا کہ قوانین کے مطابق سال میں چار مرتبہ بورڈ آف گورنرز کا اجلاس ہوتا ہے، لیکن بدقسمتی سےاب تک ایک اجلاس بھی نہیں ہوسکا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ جو میرا کام تھا وہ میں نے کیا اور بورڈ کے اجلاس کے لیے فائل وزارتِ داخلہ کو ارسال کردی اور جب انھوں نے ا±س فائل کو وزیراعظم ہاوس بھیجا تو وہاں سے اب تک کوئی جواب نہیں آیا۔اس سوال پر کہ کیا آپ نے وزیر داخلہ چوہدری نثار سے اس حوالے سے کوئی بات کی؟ احسان غنی کا کہنا تھا کہ جو وجوہات تھیں وہ میں نے بتا دی ہیں، اب آپ کو وزیراعظم ہاو¿س سے رابطہ کرنا چاہیے۔

احسان غنی نے کہا کہ جب میں نے اپنے عہدے کا چارج سنبھالا تو ہمارے پاس دفتر میں افسران کو بٹھانے تک کی جگہ موجود نہیں تھی، لیکن اس مسئلے کو عارضی طور پر حل کیا گیا اور اب ان لوگوں کو نیشنل پولیس بیورو کی عمارت میں منتقل کردیا گیا ہے۔تاہم ان کا کہنا تھا کہ جگہ کے اس مسئلے کو مستقبل بنیادوں پر حل کرنے کےلیے ہم نے وزارتِ خزانہ کو درخواست ارسال کردی ہے اور امید ہے کہ اسے منظور کرلیا جائے گا، کیونکہ قومی بجٹ میں اس کا ذکر کیا گیا تھا۔

نیکٹا کے سربراہ نے شکوہ کیا کہ دفتر کی جگہ کے مسئلے کو تو 2013 میں ہی حل ہوجانا چاہیے تھا، کیونکہ جب آپ کے پاس

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

11/08/2016 - 11:21:57 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان