بھارتی سیاسی جماعتوں کا کرفیو اور نہتے کشمیریوں پر قابض فوج کی جانب سے چھرا بندوق ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ اگست

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 10/08/2016 - 22:04:13 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 22:04:13 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 22:04:13 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 21:59:25 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 21:59:25 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 21:58:14 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 21:55:48 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 21:55:47 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 21:44:00 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 21:44:00 وقت اشاعت: 10/08/2016 - 21:41:46
پچھلی خبریں - مزید خبریں

بھارتی سیاسی جماعتوں کا کرفیو اور نہتے کشمیریوں پر قابض فوج کی جانب سے چھرا بندوق کے استعمال پر پابندی لگانے کا مطالبہ

مقبوضہ وادی کی کٹھ پتلی حکومت کے پاس مسائل حل کرنے کے لئے افرادی قوت ہی نہیں ٗغلام نبی آزاد

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔10 اگست ۔2016ء) بھارتی اہم سیاسی جماعتوں نے بھی مقبوضہ وادی میں 34 روز سے جاری کرفیو اور نہتے کشمیریوں پر قابض فوج کی جانب سے چھرا بندوق کے استعمال پر پابندی لگانے کا مطالبہ کردیا ہے۔گزشتہ 33 روز سے کرفیو اور احتجاجی مظاہروں کے دوران قابض فوج کے ہاتھوں جام شہادت نوش کرنے والے کشمیریوں کی تعداد 80 سے تجاوز کرگئی ہے، اس کے علاوہ بھارت کے قابض بھارتی فوج کی جانب سے جانوروں کے شکار کے لیے استعمال ہونے والی چھرا بندوقوں نے سیکڑوں نوجوانوں کو بصارت سے محروم کردیا وادی میں انٹر نیٹ اور موبائل فون کی سہولت معطل ہے تاہم اس کے باوجود معروف کشمیری حریت پسند برہان وانی کی شہادت اور اس نتیجے میں کشمیری عوام کے پر امن احتجاج نے عالمی میڈیا کے بعد اب بھارتی سیاستدانوں بھی جھنجھوڑ ڈالا ہے اور اب اس کی بازگشت 70 برس سے کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ ہے کا راگ الاپنے والے ایوانوں تک جاپہنچی ۔

بھارتی ایوان بالا راجیہ سبھا کے اجلاس کے دوران اپوزیشن جماعتوں نے مودی سرکار پر کْھل کر تنقید کی۔ راجیہ سبھا میں قائد حزب اختلاف اور کانگریس پارٹی کے رہنما غلام نبی آزاد کا کہنا تھا کہ وہ بھارت میں حکومت کرنے والی کسی بھی جماعت کو مقبوضہ کشمیر کی صورت حال کا ذمہ دار قرار نہیں دیتے۔ مقبوضہ وادی کی کٹھ پتلی حکومت

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

10/08/2016 - 21:58:14 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان