لاہور،جماعۃالدعوۃ پاکستان کے زیر اہتمام مسجد شہداء مال روڈ پر سانحہ کوئٹہ کے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل اگست

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:28:13 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:26:55 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:26:55 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:26:55 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:24:26 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:22:48 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:22:48 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:17:44 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:17:44 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:16:22 وقت اشاعت: 09/08/2016 - 22:13:33
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

لاہور،جماعۃالدعوۃ پاکستان کے زیر اہتمام مسجد شہداء مال روڈ پر سانحہ کوئٹہ کے شہداء کی غائبانہ نماز جنازہ اد اکی گئی

لاہور( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔9 اگست ۔2016ء )جماعۃالدعوۃ پاکستان کے زیر اہتمام مسجد شہداء مال روڈ پر سانحہ کوئٹہ کے شہداء کی غائبانہ نماز جنازہ اد اکی گئی جس میں مذہبی و سیاسی قائدین، جید علماء کرام، وکلاء، طلباء، تاجروں اور سول سوسائٹی سمیت دیگر شعبہ جات سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ اس موقع پر زبردست جذباتی کیفیت دیکھنے میں آئی۔

حافظ محمد سعید نے غائبانہ نما زجنازہ پڑھائی تو شرکاء کی کثیر تعداد زاروقطار روتی رہی۔ قبل ازیں مسجد شہداء میں ایک بڑے احتجاجی جلسہ کا انعقاد کیا گیا۔ اس دوران شرکاء کی طرف سے بھارت کیخلاف شدید نعرے بازی کی جاتی رہی۔ جلسہ عام سے امیر جماعۃالدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید، پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، مولانا امیر حمزہ ،جسٹس (ر) عبدالحفیظ چیمہ،رانامحمد عظیم،مولانا سیف اﷲ خالد، سردار خرم لطیف کھوسہ ایڈوکیٹ شیخ نعیم بادشاہ ،ابوالہاشم ربانی اورحافظ خالد ولید نے خطاب کیا۔

جماعۃالدعوۃ کے سربراہ حافظ محمد سعید نے اپنے خطاب میں کہاکہ کوئٹہ ہسپتال میں دھماکہ انڈیا کی ریاستی دہشت گردی اور پورے پاکستان پر حملہ ہے۔اس کا ذمہ دار بھارت کی قومی سلامتی کا مشیر اجیت دوول اور اس کی خفیہ ایجنسی را ہے۔ پاکستانیوں کے دل تب ٹھنڈے ہوں گے جب کلبھوشن یادیو کو تین دن کے اند ر کوئٹہ کے میزان چوک میں پھانسی کے پھندے پر لٹکایا جائے گا۔

وکلاء اور صحافیوں سے وعدہ کرتے ہیں کہ ہم قصاص کی تحریک منظم کریں گے۔ حملے کا جواب حملہ کی صورت میں دینا ضروری ہے‘ اس کے بغیر بات نہیں بنے گی۔ وزیر اعظم ، آرمی چیف اور کابینہ کے ممبران اپنی ذمہ داریاں ادا کریں۔ یہ باقاعدہ جنگ ہے۔ ہم تمام سیاسی ،مذہبی قائدین، وکلاء اور صحافی حضرات سے گزارش کرتے ہیں کہ ملک میں اتحادویکجہتی کا ماحول پیدا کیاجائیس۔

یہ جنگی او رغیر معمولی حالات ہیں۔کوئٹہ میں بہنے والاخون صرف وکلاء اورصحافیوں کا نہیں بلکہ ہر پاکستانی کا ہے۔انہوں نے کہاکہ کشمیر اور بلوچستان دونوں انڈیا کی جارحیت کا شکار ہیں۔ہم انہیں الگ الگ نہیں دیکھ رہے۔ انڈیا وطن عزیز پاکستان میں دہشت گردی کی آگ بھڑکا کر کشمیر میں جاری تحریک سے توجہ ہٹانا چاہتا ہے کیونکہ یہاں اس وقت انڈیا پوری دنیا میں ذلیل ہو رہا ہے لیکن انڈیا یاد رکھے تم ایسی حرکتیں کر کے زیادہ آگ بھڑکا رہے ہو۔

تمہارے خلاف کیس زیادہ پختہ ہو رہاہے اور تمہاری تباہی کے دن زیادہ قریب آرہے ہیں۔ حافظ محمد سعید نے کہاکہ کوئٹہ میں دہشت گردی بہت بڑا سانحہ ہے۔بلوچستان میں ایک دن قبل پاکستانی پرچم فروخت کرنے والے ہمارے ایک کارکن کو شہید کیا گیا اور اس سے اگلے دن ہی بلوچستان ہائی کورٹ کے صدر اور پھر ہسپتال دھماکہ کر کے ایک سوسے زائدوکلاء ، صحافیوں اور دیگر افراد کو شہید کر دیا گیا۔

اجیت دوول نے کہاتھا کہ ہم بلوچستان کو پاکستان سے الگ کریں گے اور مشرقی پاکستان جیسے حالات پیدا کریں گے۔ کلبھوشن یادیو اور اس کے مزید ایجنٹ بلوچستان سے گرفتار ہوئے جنہوں نے واضح طو رپر اعتراف کیا کہ وہ یہاں علیحدگی کی تحریکیں پروان چڑھانے آئے تھے۔ انہوں نے کہاکہ تخریب کاروں کے پیچھے انڈیا ہے۔ ہمارا اصل مجرم اجیت دوول ہے۔ یہ انڈیا کی ریاستی دہشت گردی کا واقعہ ہے۔

اس پر پاکستانی کبھی خاموش نہیں رہیں گے۔ ہم اپنے وکلاء اور صحافی بھائیوں سے وعدہ کرتے ہیں کہ ہم قصاص کی تحریک منظم کریں گے۔ جو لوگ پاکستان میں بیٹھ کر انڈیا کی زبان بول رہے ہیں۔ انہیں دنیا کے سامنے بے نقاب کرنے کا وقت ہے۔ راکے ایجنٹ جو کراچی اور بلوچستان سے پکڑ ے گئے انہیں کراچی اور کوئٹہ میں پھانسیاں دی جائیں۔ جو پشاور میں بچوں کے قاتل ہیں انہیں پشاور میں پھانسیاں دی جائیں۔

محض مذمتی بیانات کافی نہیں ہیں۔ اس سے ذمہ داری ادا نہیں ہو گی۔انہوں نے کہاکہ مودی کو سمجھانے کیلئے وہ تصویر ہی کافی ہے جس میں دس

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

09/08/2016 - 22:22:48 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان