چینی کمپنی جرمن روبوٹ ساز فرم کے پچانوے فیصد شیئرز کی مالک
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر اگست

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 08/08/2016 - 22:23:01 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 22:15:12 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 22:15:12 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 22:15:12 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 21:46:21 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 21:42:59 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 21:29:21 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 21:24:20 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 20:47:15 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 20:47:15 وقت اشاعت: 08/08/2016 - 20:00:10
پچھلی خبریں - مزید خبریں

چینی کمپنی جرمن روبوٹ ساز فرم کے پچانوے فیصد شیئرز کی مالک

یورپ نے اس ہائی ٹیکنالوجی کمپنی کے ہاتھ سے جانے پر خدشات کا اظہار کردیا

بیجنگ ، برلن( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔8 اگست ۔2016ء )ایک بڑی چینی مصنوعات ساز کمپنی ’میڈیا‘ نے کہا ہے کہ اس نے روبوٹ بنانے والی جرمن فرم ’کوکا‘ کے تقریباً پچانوے فیصد حصص حاصل کر لیے ہیں۔ یورپ نے اس ہائی ٹیکنالوجی کمپنی کے ہاتھ سے جانے پر خدشات کا اظہار کیا ہے۔میڈیا نامی چینی فرم اب چین کے کارخانوں میں مزدوری کے بڑھتے ہوئے اخراجات کو کم کرنے کے لیے ایک خود کار پیداواری نظام متعارف کروانا چاہتی ہیچینی فرم کے پاس پہلے سے ہی کوکا کے 13.51 فی صد شیئرز موجود تھے۔

’کوکا‘ دنیا میں صنعتی روبوٹ تیار کرنے والی بڑی کمپنی ہے۔ ’میڈیا‘ نے رواں برس جون میں کوکا کو 115 یورو فی شیئر کی پیشکش کی تھی جس کے مطابق روبوٹ ساز فرم کی مالیت 4.6 بلین یورو بنتی ہے۔ ’میڈیا‘ نے آٹھ اگست کو جاری کردہ اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ تین اگست کی رات 81.04 فیصد حصص کے ٹینڈر ملنے کے بعد وہ کوکا کے چورانوے اعشاریہ چار فی صد شیئرز کی مالک ہے۔

تاہم اس سودے کی ابھی باضابطہ منظوری ہونا باقی ہے۔ جرمن وزیر اقتصادیات زیگمار گابریل اور یورپی کمشنرگنتھر آؤٹ نگر سمیت برسلز اور برلن میں حکام نے جرمن ہائی ٹیکنالوجی کے چینی فرم کے ہاتھوں میں چلے جانے پر خدشات کا اظہار کیا ہے۔ حالیہ برسوں میں کئی جرمن کمپنیاں چینی ملکیت میں جا چکی ہیں، جن میں کیون، پٹز مائسٹر اور کراوٴس مافائی جیسی کمپنیاں بھی شامل ہیں۔

تاہم یورپی وزراء کے پاس اتنے اختیارات نہیں ہیں کہ وہ اس سودے کو روک سکیں۔ واشنگ مشینیں اور ایئر کنڈیشنر بنانے کے لیے مشہور میڈیا نامی چینی فرم اب چین کے کارخانوں میں مزدوری کے بڑھتے ہوئے اخراجات کو کم کرنے کے لیے ایک خود کار پیداواری نظام متعارف کروانا چاہتی ہے۔ اس طرح دنیا کی دوسری سب سے بڑی اقتصادی قوت یعنی چین میں دیگر صنعت کار بھی کوکا کے روبوٹس خریدنے میں دلچسپی لیں گے۔

’کوکا‘ دنیا میں صنعتی روبوٹ تیار کرنے والی بڑی کمپنی ہیکوکا نے سن 2013 سے چین میں بھی اپنی ایک فیکٹری قائم کر رکھی ہے۔ میڈیا‘ نے ایک ایسے معاہدے پر بھی دستخط کر رکھے ہیں جس کی رو سے اگر کوکا کی خریداری کا سودا درحقیقت عمل میں آ جاتا ہے تو چین جرمنی میں ملازمتوں اور پلانٹس کی ضمانت دے گا۔ تاہم جرمنی میں اثر و رسوخ رکھنے والی میٹل ٹریڈ یونین اب بھی کوکا میں اکثریتی حصص جرمن ہاتھوں میں رکھنے پر مصر ہے۔ جب اس برس جولائی کے اوائل میں ’میڈیا‘ نے کوکا میں ٹیکنالوجی فرم وائتھ کے پچیس اعشاریہ ایک فیصد حصص خریدنے کے لیے پیشکش کی تھی تو کوئی بھی جرمن کمپنی خریدار کے طور پر آگے نہیں آئی تھی۔

08/08/2016 - 21:42:59 :وقت اشاعت