امریکی فوجی تاریخ میں پہلی مرتبہ خاتون جنگی کمانڈکی سربراہی کے لیے نامزد
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
ہفتہ مارچ

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:50:20 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:48:11 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:48:11 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:48:11 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:47:34 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:47:34 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:47:34 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:46:56 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:46:56 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:09:35 وقت اشاعت: 19/03/2016 - 11:09:35
پچھلی خبریں - مزید خبریں

امریکی فوجی تاریخ میں پہلی مرتبہ خاتون جنگی کمانڈکی سربراہی کے لیے نامزد

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔19 مارچ۔2016ء) امریکی فوجی تاریخ میں پہلی مرتبہ خاتون کو جنگی کمانڈ کی سربراہی کے لیے نامزد کردیا گیا ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی وزیر دفاع ایش کارٹر نے جنرل لوری رابنسن کو امریکی فوج کی ناردرن کمانڈ کی سربراہی کے لیے نامزد کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ ایش کارٹر کا کہنا تھا کہ ’جنرل رابنسن، اول ترین خاتون جنگی کمانڈر بھی بن سکتی ہیں۔

‘امریکی فوج کی ناردرن کمانڈ تمام شمالی امریکہ کی نگرانی کا ذمہ دار ہے۔اس عہدے کا شمار امریکی فوج کے اعلیٰ ترین عہدوں میں ہوتا ہے اور اس سینیٹ سے اس کی توثیق ضروری ہے۔جنرل لوی رابنسن پیسیفک ایئر فورسز کی کمانڈر ہیں اور انھوں نے 1982 میں امریکی فضائیہ میں شمولیت اختیار کی تھی۔گذشتہ سال امریکی فوج کے تمام جنگی فرائض کے لیے خواتین کی شمولیت کی اجازت دی گئی،اس فیصلے سے خواتین کے لیے دو لاکھ 20 ہزار سے زائد آسامیاں دستیاب ہوئیں۔

19/03/2016 - 11:47:34 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان