شامی کردوں کا شمالی شام میں وفاقی نظام کے قیام کا اعلان
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 17/03/2016 - 20:54:42 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 20:54:41 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 20:11:22 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 20:11:22 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 19:59:11 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 19:59:11 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 19:59:11 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 19:57:18 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 19:57:18 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 19:57:18 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 19:55:44
پچھلی خبریں - مزید خبریں

شامی کردوں کا شمالی شام میں وفاقی نظام کے قیام کا اعلان

ترکی نے کردوں کے نظام کی مخالفت کردی ،شام کے اتحاد کی حمایت کا اظہار

دمشق(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔17 مارچ۔2016ء)شام کے کردوں نے کہا ہے کہ وہ ملک کے شمال میں اپنے زیر قبضہ علاقوں میں وفاقی نظام کے نفاذ کا اعلان کرنے والے ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق ترکی کی سرحد کے نزدیک واقع شام کے شمالی شہر کوبانی (عین العرب) میں کردوں کی خود مختار انتظامیہ کے تحت نظامت خارجہ امور کے ایک عہدے دار ادریس نعسان نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس اعلان سے خود انتظامی کا فریم ورک وسیع ہوگا۔

انھوں نے کہا کہ یہ علاقے ''شمالی شام کا وفاق'' کہلائیں گے اور یہ وفاق وہاں رہنے والے تمام نسلی گروپوں کا نمائندہ ہوگا''۔ واضح رہے کہ کرد جنگجو گروپ پیپلز پروٹیکشن یونٹس (وائی پی جی) اور دوسرے گروپوں نے شام کے تین شمالی علاقوں کوبانی ،سیرین اور قامشیلی میں گذشتہ دو سال سے اپنی خود مختار انتظامیہ قائم کر رکھی ہے۔درایں اثناء ترکی نے شام کے شمالی علاقے میں کردوں کی جانب سے وفاقی نظام کے قیام کی مخالفت کردی ہے اور کہا ہے کہ وہ شام کے قومی اتحاد کا حامی ہے۔ترک وزارت خارجہ کے ایک عہدے دار نے کہا ہے کہ شام میں حکومت کی شکل اور انتظامی ڈھانچے کا فیصلہ شامی عوام کے تمام طبقات ایک نئے آئین کی صورت میں کرینگے۔

17/03/2016 - 19:59:11 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان