شادی سے انکار پر چچازاد نے 21 سالہ لڑکی کو شادی پر ہی قتل کر دیا
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:51:44 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:51:44 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:51:12 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:51:12 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:50:25 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:42:33 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:41:40 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:41:40 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:23:38 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:08:38 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 10:57:26
پچھلی خبریں - مزید خبریں

شادی سے انکار پر چچازاد نے 21 سالہ لڑکی کو شادی پر ہی قتل کر دیا

جرمنی (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔17 مارچ 2016ء): شادی سے انکار پر چچا زاد نے شادی کے دن ہی دلہن کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔ تفصیلات کے مطابق 21 سالہ لڑکی کے والد عراق کے کرد خاندان سے تعلق رکھتے ہیں جو کہ گذشتہ 18 سال سے جرمنی میں ہی مقیم تھے۔ 21 سالہ لڑکی کے والد نے خون میں لت پت اپنی بیٹی کی تصویر سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر شئیر کی اور لکھا کہ انتہائی دکھ، درد اور خون کے آنسو روتے دل کے ساتھ، میں اپنی پیاری بیٹی شیلان کی موت کا اعلان کرتا ہوں۔

مذکورہ شخص نکے بھائی نے ان کی بیٹی شیلان کی شادی عراق میں مشن پر موجود اپنے دو بیٹوں میں سے کسی ایک کے ساتھ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ تاہم 21 سالہ لڑکی شادی کی خواہشمند نہیں تھی جس کے باعث لڑکی نے شادی روکنے کی خواہش کا اظہار کیا۔ مقتولہ کے والد کا کہنا تھا کہ میری بیٹی رسم و رواج اور دھوکے کی بھینٹ چڑھی ہے۔ تاہم یہ جُرم ایک معصوم کے خلاف تھا۔ مقتولہ کے اہل خانہ نے انصاف کی اپیل ہے تاہم 21 سالہ لڑکی کو شادی کے دن قتل کرنے والے نوجوان اور اس کے اہل خانہ سے متعلق کوئی معلومات موصول نہیں ہوئیں۔

اس خبر کا حوالہ
17/03/2016 - 11:42:33 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان