حماس نے 6 ماہ میں پہلی مرتبہ مغربی کنارے کے علاقے میں اسرائیلی فوجیوں پر حملے کی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات مارچ

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 17/03/2016 - 12:01:27 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:54:15 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:54:15 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:41:40 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:38:10 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:38:10 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:38:10 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:35:48 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:35:48 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:35:48 وقت اشاعت: 17/03/2016 - 11:29:53
پچھلی خبریں - مزید خبریں

حماس نے 6 ماہ میں پہلی مرتبہ مغربی کنارے کے علاقے میں اسرائیلی فوجیوں پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

31 سالہ قاسم اودا نے مبینہ طور پر اسرائیلی فوجی پر چاقو سے حملہ کیا تھا

غزہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔17 مارچ۔2016ء ) فلسطینی حماس کے عسکری ونگ نے 6 ماہ میں پہلی مرتبہ فلسطین کے مغربی کنارے کے علاقے میں اسرائیلی فوجیوں پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق عزالدین القسام بریگیڈ نے جاری بیان میں مغربی کنارے کے جنوبی حصے ہبرو سے تعلق رکھنے والے 31 سالہ قاسم اودا کو اپنا رکن قرار دیا ہے، جس نے مبینہ طور پر اسرائیلی فوجی پر چاقو سے حملہ کیا تھا۔

۔خیال رہے کہ گزشتہ سال اکتوبر میں اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان آغاز ہونے والے نئے تنازع میں پہلی بار حماس نے اپنے رکن کی جانب سے اسرائیلی فوج پر حملے کا اعتراف کیا ہے۔اسرائیلی فوج کا کہنا تھا کہ انھوں نے دو دن قبل اسرائیلی فوج پر ہونے والے مختلف حملوں میں 3 فلسطینیوں کو ہلاک کردیا تھا جبکہ ان واقعات میں ایک فوجی افسر اور 3 سپاہی زخمی ہوگئے تھے۔

فلسطین کے وزیر صحت نے ہلاک ہونے والے فلسطینیوں کی شناخت جابر، عامر جونیدی اور یوسف تارایا کے ناموں سے کی تھی۔القسام بریگیڈ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ جابر بریگیڈ کا رکن تھا۔ان

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

17/03/2016 - 11:38:10 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان