پاکستان کیلئے چیک ریپبلک کے ساتھ سافٹ ویئرپراڈیکٹس کی برآمدات کو فروغ دینے کے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 16/03/2016 - 19:30:02 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 19:30:02 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 19:26:39 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 19:26:14 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 19:19:44 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 18:59:36 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 18:52:52 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 18:52:52 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 18:47:00 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 17:49:39 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 17:48:36
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

پاکستان کیلئے چیک ریپبلک کے ساتھ سافٹ ویئرپراڈیکٹس کی برآمدات کو فروغ دینے کے وسیع مواقع پائے جاتے ہیں، جان فیوری

انٹرپرینیورز انفارمیشن ٹیکنالوجی اور سافٹ ویئر کے شعبوں میں چیک ریپبلک کے ساتھ کاروبار کے نئے مواقع تلاش کرنے کیلئے کوششیں تیز کریں، سفیر چیک ریپبلک

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔16 مارچ۔2016ء) پاکستان میں تعینات چیک ریپبلک کے سفیر جان فیوری نے کہا کہ ان کا ملک امریکہ کے بعد دنیا میں کمپیورٹر گیمز تیار کرنے والا دوسرا بڑا ملک ہے اور پاکستان کیلئے چیک ریپبلک کے ساتھ سافٹ ویئر پراڈیکٹس کی برآمدات کو فروغ دینے کے وسیع مواقع پائے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انڈیا کی آئی ٹی کمپنیا ں چیک ریپبلک کی سافٹ ویئر کمپنیوں کیلئے پراڈیکٹس تیار کر کے اس کے ساتھ کامیاب کاروبار کر رہی ہیں لہذا پاکستان کے انٹرپرینیورز کو چاہیے کہ وہ انفارمیشن ٹیکنالوجی اور سافٹ ویئر کے شعبوں میں چیک ریپبلک کے ساتھ کاروبار کے نئے مواقع تلاش کرنے کیلئے کوششیں تیز کریں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں تاجر برادری کے ساتھ تبادلہ خیال کرتے ہوئے کیا۔ چیک ریپبلک سفارتخانے کے اکنامک کونسلر جناب لوبوسلیو میذوریک بھی اس موقع پر ان کے ہمراہ تھے۔ جان فیوری نے کہا کہ چیک ریپبلک کی اس خطے میں جڑیں بہت پرانی ہیں کیونکہ ان کے ملک کی جوتے بنانے والی مشہور کمپنی باٹا 1932میں برصغیر میں قائم کی گئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان زیادہ تر ٹیکسٹائل اور گارمنٹس چیک ریپبلک کو برآمد کر رہا ہے تاہم ضرورت اس بات کی ہے کہ برآمدات کو بہتر فروغ دینے کیلئے پاکستان دیگر مصنوعات پر توجہ دے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چیک ریپبلک کی دوطرفہ تجارت پچھلے چند سالوں میں بہتری کی طرف بڑھ رہی ہے کیونکہ 2013میں باہمی تجارت میں 8فیصد ترقی ہوئی، 2014میں 20فیصد اور 2015کے پہلے چھ ماہ میں اس میں 24فیصد ترقی دیکھنے میں آئی۔

تاہم انہوں نے کہا کہ پاکستان آئی ٹی اور سافٹ ویئر مصنوعات سمیت دیگر جدید مصنوعات پر توجہ دے کے چیک ریپبلک کے ساتھ اپنی برآمدات میں نمایاں بہتری لا سکتا ہے۔سفیر نے کہا کہ پاکستان کا توانائی شعبہ چیک ریپبلک کی ترجیحات میں شامل ہے اور ان کا ملک پاکستان کے ساتھ کلین انرجی میں تعاون کر سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ زراعت، بائیو ٹیکنالوجی، نانوٹیکنالوجی اور ماحول کا تحفظ کے شعبوں میں بھی دونوں ممالک کے درمیان مشترکہ تعاون

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16/03/2016 - 18:59:36 :وقت اشاعت