سندھ پولیس کے فنڈز میں ایک ارب40 کروڑ روپے کی کرپشن‘ نیب نے تحقیقات شروع کردیں
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:49:56 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:49:56 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:48:41 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:45:13 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:44:06 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:43:04 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:39:59 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:39:59 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:34:03 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:31:19 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 16:31:19
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

سندھ پولیس کے فنڈز میں ایک ارب40 کروڑ روپے کی کرپشن‘ نیب نے تحقیقات شروع کردیں

کراچی(ا ردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔16مارچ۔2016ء)سندھ پولیس کے مختلف فنڈز میں مبینہ طور پر ایک ارب40 کروڑ روپے کرپشن کی نیب نے تحقیقات شروع کر دی ہیں۔ حال ہی میں عہدے سے ہٹائے گئے سابق ا?ئی جی سندھ غلام حیدر جمالی سمیت 70 پولیس افسران واہلکار اس مبینہ کرپشن پر نیب کی زد میں آسکتے ہیں۔ سابق آئی جی غلام حیدر جمالی پر منی لانڈرنگ کا بھی الزام ہے۔

نیب حکام کے مطابق پولیس فنڈز میں بدعنوانی سال 2014 اور 2015 کے دوران کی گئی۔ پولیس بجٹ میں بدعنوانی کا پولیس کی کارکردگی پر انتہائی برا اثر پڑا۔نیب ذرائع کے مطابق تفتیشی فنڈ، فرنیچرومشینری کی خریداری، ٹرانسپورٹ، ایندھن، ادویات کی خریداری اور عمارت کی مرمت کی مد میں کرپشن کی گئی۔نیب روزانہ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16/03/2016 - 16:43:04 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان