دہشتگردی کے خاتمے کیلئے سانحہ اے پی ایس اورچارسدہ کے ذ مہ داروں کا تعین ضروری ہے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:29:49 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:28:59 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:28:59 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:28:59 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:25:10 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:25:10 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:25:10 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:24:34 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:24:34 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:24:34 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 13:23:35
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

دہشتگردی کے خاتمے کیلئے سانحہ اے پی ایس اورچارسدہ کے ذ مہ داروں کا تعین ضروری ہے ، اسفند یار ولی

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔16 مارچ۔2016ء)عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہ اسفند یار ولی خان نے کہا ہے کہ اے پی ایس سکول پشاور اور باچا خان یونیورسٹی چارسدہ کے واقعات پر جوڈیشنل کمیشن قائم کر کے ذمہ داران کا تعین کر لیا جاتا تو دہشت گردوں کا نیٹ ورک کمزور کیا جا سکتا تھا۔لگتا یہ ہے کہ دہشت گردوں کے سرپرستوں کو بچانے کیلئے جوڈیشنل کمیشن قائم نہیں کیا جا رہا ۔

اسفند یا ولی خان نے پشاور میں سرکاری ملازمین کی بس میں بم دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبہ خیبر پختون خواہ موجودہ صوبائی حکومت کے دور میں دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہ بن چکا ہے۔اتحادی حکومت میں شریک جماعتیں بندر بانٹ میں مصروف ہیں اور صوبے کو دہشت گردوں کے حوالے کر دیا ہے۔اب تو صوبائی وزراء اور ممبران صوبائی ا سمبلی دہشت گردوں کو باقاعدہ بھتا دے رہے ہیں جس کی وجہ سے انتظامیہ اور پولیس کمزور ہو رہی ہے اور پولیس کا مورال ڈاؤن ہونے کی وجہ سے دہشت گرد آذادانہ کاروائیاں کر رہے ہیں۔

اے این پی کے ترجمان اور مرکزی سیکرٹری اطلاعات زاہد خان کی طرف سے جاری کردہ بیان میں اسفند یار

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16/03/2016 - 13:25:10 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان