ثمینہ خاور حیات جعلی ڈگری کیس :سپریم کورٹ نے یونیورسٹی انتظامیہ کو طلب کرلیا
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:36:35 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:36:35 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:36:33 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:33:46 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:32:23 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:32:23 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:32:23 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:28:53 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:14:54 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:14:54 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:12:15
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

ثمینہ خاور حیات جعلی ڈگری کیس :سپریم کورٹ نے یونیورسٹی انتظامیہ کو طلب کرلیا

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔16 مارچ۔2016ء) سپریم کورٹ نے ثمینہ خاور حیات جعلی ڈگری کیس کی سماعت 6 اپریل تک ملتوی کرتے ہوئے یونیورسٹی انتظامیہ کو طلب کر لیا ہے ۔ چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں پانچ رکنی لارجر بنچ نے بدھ کے روز سماعت کی اس دوران درخواست گزار کی جانب سے طارق محمود پیش ہوئے اور انہوں نے عدالت کو بتایا کہ الیکشن کمیشن اور ہائر ایجوکیشن کمیشن ان کی موکل کی سند کی تصدیق کر چکے ہیں اس پر جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ آپ کی سند کے حوالے سے دو مختلف رائے ہیں اس کے لئے ہم چاہتے ہیں کہ کنفیوژن ختم ہو جائے اس لئے ریکارڈ منگوایا تھا اس دوران ثمینہ خاور حیات نے عدالت کو خود اٹھ کر بتایا کہ یونیورسٹی انتظامی آنا چاہتی تھی انہیں تاریخ کا پتہ نہیں تھا اور نہ ہی آپ نے انہیں بلایا تھا آپ انہیں بلا کر تصدیق کر لیں جس پر عدالت نے یونیورسٹی انتظامیہ کو طلب کرتے ہوئے سماعت چھ اپریل تک ملتوی کر دی ۔

16/03/2016 - 12:32:23 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان