شینگن ویزا۔ کون آیا کون واپس گیا۔ ریکارڈ رکھنے کے منصوبہ پر کام شروع
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ مارچ

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:28:53 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:28:53 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:26:26 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:25:06 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:19:16 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 12:09:46 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 11:05:54 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 11:05:54 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 11:05:54 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 11:05:22 وقت اشاعت: 16/03/2016 - 11:05:22
پچھلی خبریں - مزید خبریں

شینگن ویزا۔ کون آیا کون واپس گیا۔ ریکارڈ رکھنے کے منصوبہ پر کام شروع

span class="HOEnZb adL">

شینگن زون(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔

16 مارچ۔2016ء)

شینگن زون میں داخل ہونے کے بعد کوئی واپس بھی گیا یا نہیں؟ فی الحال رکن ممالک کے پاس کوئی منظم ریکارڈ موجود نہیں ہے جس کی وجہ سے مہاجرین کا بحران مزید پیچیدہ ہو جاتا ہے۔ جرمن وزیر داخلہ اس صورت حال کو بدلنا چاہتے ہیں۔ جرمنی کے وفاقی وزیر داخلہ تھوماس ڈے میزیئر شینگن علاقے میں آنے اور جانے والوں کا منظم ریکارڈ رکھنے کے ایک منصوبے پر کام کر رہے ہیں۔

فی الحال چھبیس یورپی ممالک پر مشتمل آزادانہ سفری معاہدے کے علاقے یا شینگن زون میں آنے اور جانے والوں پر نظر رکھنے کا کوئی منظم ریکارڈ نہیں ہے۔ ڈے میزیئر نے ’ڈی ویلٹ‘ نامی جرمن اخبار کو دیے گئے اپنے ایک تازہ انٹرویو میں کہا، ’’بین الاقوامی دہشت گردی، جرائم پیشہ گروہوں اور غیر قانونی نقل مکانی کا مقابلہ کرنے کے لیے ضروری ہے کہ ہمیں معلوم ہو کہ کون کب اور کہاں سے شینگن علاقے میں داخل ہوا اور کہاں سے واپس گیا۔

‘‘

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16/03/2016 - 12:09:46 :وقت اشاعت