اقتصادی رابطہ کونسل کے گندم برآمد کرنے کے فیصلے پر عملدرآمد نہ کرنے کے باعث افغانستان ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل مارچ

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 15/03/2016 - 22:28:08 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 22:28:07 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 22:26:55 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 22:26:54 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 22:26:54 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 22:25:24 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 22:23:26 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 22:08:26 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:46:51 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:46:51 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:46:50
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

اقتصادی رابطہ کونسل کے گندم برآمد کرنے کے فیصلے پر عملدرآمد نہ کرنے کے باعث افغانستان کی منڈی پر بھارت ، روسی ریاستوں کا قبضہ ہو چکا ‘ فلور ملز ایسوسی ایشن

وفاقی حکومت صوبوں سے گندم کے متعلقہ تمام معاملات اپنے کنٹرول میں لے ورنہ راست اقدام پر مجبور ہو جائینگے ‘عہدیداروں کی پریس کانفرنس

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔15 مارچ۔2016ء)پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن نے کہا ہے کہ پنجاب کی طرف سے اقتصادی رابطہ کونسل کے گندم برآمد کرنے کے فیصلے پر عملدرآمد نہ کرنے کے باعث افغانستان کی منڈی پر بھارت اور روسی ریاستوں کا قبضہ ہو چکا ہے ،وفاقی حکومت صوبوں سے گندم کے متعلقہ تمام معاملات اپنے کنٹرول میں لے ورنہ راست اقدام پر مجبور ہونگے ۔

ان خیالات کا اظہارمرکزی چیئرمین نعیم بٹ ،پنجاب کے چیئرمین چوہدری افتخار مٹو ،سابق چیئرمین عاصم رضا سمیت دیگر نے ہیڈ آفس میں پریس کانفرنس میں کیا ۔فلور ملز ایسوسی ایشن یک عہدیداروں نے کہا کہ وفاقی حکومت نے ایکسپورٹ پر ریبیٹ دیا لیکن پنجاب نے ریبیٹ دینے سے انکار کر دیا جس کی وجہ سے ایکسپورٹ رک گئی اور سرپلس گندم گوداموں میں پڑی گل سڑ رہی ہے جس پر دھڑا دھڑ سود دے کر پنجاب کے عوام کو مقروض کیا جا رہا ہے نئی فصل جب آ چکی ہے تو آپ پرانی گندم فروخت کر دیں تاکہ گودام خالی ہوں لیکن ضد اور جھوٹی انا کی وجہ سے سرپلس گندم اپنے پاس رکھ کر پنجاب حکومت کو مالی خسارے کا شکار کیا جا رہا ہے اس لئے وفاقی حکومت فوری طور پر ان کو اپنے کنٹرول میں رکھے ۔

پنجاب اگر ریبیٹ دیتی تو دس لاکھ ٹن گندم اب تک ایکسپورٹ ہو چکی ہوتی جس کا فائدہ کسان کو ہوتا ۔انہوں نے کہا بار بار یہ مطالبہ کر چکے ہیں کہ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15/03/2016 - 22:25:24 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان