ہائیکورٹ نے یوریا کھاد سکینڈل میں ملوث نیشنل فرٹیلائزر مارکیٹنگ لمیٹڈ کے سات ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:44:34 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:42:09 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:42:08 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:42:08 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:41:59 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:41:59 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:39:49 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:35:22 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:35:22 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:24:48 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 21:24:03
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

ہائیکورٹ نے یوریا کھاد سکینڈل میں ملوث نیشنل فرٹیلائزر مارکیٹنگ لمیٹڈ کے سات مارکیٹنگ افسروں کی ضمانتیں منظور کرلیں

وہ رپورٹس پیش کی جائیں جن سے مارکیٹنگ افسروں کا کرپشن کے حوالے سے الگ الگ کردار واضح ہو تاہو‘ عدالت کا استفسار , نیب کے افسر عدالت میں کوئی رپورٹ پیش نہ کر سکے /نیب نے ناقص تفتیش کر کے اپنا کیس خراب کر لیا ہے‘ فاضل بنچ

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔15 مارچ۔2016ء ) لاہور ہائیکورٹ نے یوریا کھاد سکینڈل میں ملوث نیشنل فرٹیلائزر مارکیٹنگ لمیٹڈ کے سات مارکیٹنگ افسروں کی ضمانتیں منظور کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ نیب نے ناقص تفتیش کر کے اپنا کیس خراب کر لیا۔جسٹس طارق عباسی عباسی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے سات ملزموں کی ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کی۔

ملزمان کے وکلاء نے موقف اختیار کیا کہ نیب نے مارکیٹنگ افسروں کو بلاجواز گرفتار کر رکھا ہے، مارکیٹنگ افسروں کے ذمہ کھاد کی سپلائی اور آرڈرز کی بکنگ نہیں تھا بلکہ کھاد کا دستاویزی ریکارڈ مرتب کرنا تھا۔ نیب کی طرف سے ڈپٹی ڈائریکٹر وحید چوہدری اور سپیشل پراسیکیوٹر زاہد منہاس عدالت میں پیش ہوئے اور موقف اختیار

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15/03/2016 - 21:41:59 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان