اورنج لائن منصوبہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کا حصہ نہیں،وفاقی حکومت صرف ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:57:39 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:46:40 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:46:40 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:46:40 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:41:32 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:29:21 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:28:24 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:28:24 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:24:29 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 20:22:43 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 19:53:38
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اورنج لائن منصوبہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کا حصہ نہیں،وفاقی حکومت صرف این او سی جاری کرے گی،کوئی صوبہ وفاق کی مرضی کے بغیر بیرونی فنڈنگ نہیں لے سکتا ، 4500 میگاواٹ کے داسو ڈیم سمیت مغربی روٹ پر بھی منصوبے لگ رہے ہیں، وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و اصلاحات احسن اقبال کی سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے منصوبہ بندی کو بریفنگ

اسلام آباد ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔15 مارچ۔2016ء )سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے منصوبہ بندی کو آگا ہ کیا ہے کہ لاہور اورنج لائن منصوبہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کا حصہ نہیں،وفاقی حکومت صرف این او سی جاری کرے گی،کوئی صوبہ وفاق کی مرضی کے بغیر بیرونی فنڈنگ نہیں لے سکتا،اورنج لائن منصوبے میں وفاقی حکومت کا ایک پیسہ بھی نہیں لگے گا،راہداری منصوبے کے تحت 35 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری نجی شعبہ کرے گا ،باقی گیارہ ارب ڈالر میں چینی گرانٹ اور رعائتی قرضہ شامل ہے، 4500 میگاواٹ کے داسو ڈیم سمیت مغربی روٹ پر بھی منصوبے لگ رہے ہیں۔

منگل کوسینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے منصوبہ بندی کے اجلاس سینیٹر طاہرحسین مشہدی کی زیر صدارت ہوا اجلاس میں پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔ وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و اصلاحات احسن اقبال نے کہا کہ کوئی صوبہ وفاق کی مرضی کے بغیر بیرونی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15/03/2016 - 20:29:21 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان