زمین کی زرخیزی کیلئے ڈالی جانیوالی نائٹروجن کھاد کی 30 فیصد مقدار بخارات کی شکل ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل مارچ

مزید تجارتی خبریں

وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:52:23 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:47:28 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:47:27 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:46:39 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:46:36 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:46:34 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:42:37 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:42:35 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:40:33 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 13:36:59 وقت اشاعت: 15/03/2016 - 12:50:52
پچھلی خبریں - مزید خبریں

فیصل آباد

زمین کی زرخیزی کیلئے ڈالی جانیوالی نائٹروجن کھاد کی 30 فیصد مقدار بخارات کی شکل میں ضائع ہو جاتی ہے، ماہرین زراعت

فیصل آباد۔15 مارچ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔15 مارچ۔2016ء ) ماہرین زراعت نے کہاہے کہ مختلف فصلوں کی کاشت اور ان کی فی ایکڑ بھر پور پیداوار کے حصول سمیت اراضی کی زرخیزی کیلئے استعمال کی جانے والی نائٹروجن یوریا کھاد کی 30فیصد مقدار بخاراتی شکل میں ضائع اور گیس کی صورت میں ہوا میں تحویل ہو جاتی ہے جس کے باعث نائٹروجن کی صلاحیت میں بھی خاطر خواہ کمی و اقع ہوتی ہے اور نتیجتاً توقعات کے مطابق فصل حاصل نہیں ہوتی ۔

انہوں نے بتایاکہ یوریا پاکستان میں میجر نائٹروجن کھاد ہے اور مختلف فصلات کی کاشت سمیت زمین کو زرخیز اور زیادہ

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15/03/2016 - 13:46:34 :وقت اشاعت