شام کی 5 سالہ جنگ سے 80 فیصد بچے ذہنی اور جسمانی طور پر متاثر ہوئے، اقوام متحدہ
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 14/03/2016 - 23:12:11 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:27:01 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:27:01 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:20:14 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:19:28 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:16:16 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:16:14 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:14:16 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:14:16 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:14:16 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:11:40
- مزید خبریں

شام کی 5 سالہ جنگ سے 80 فیصد بچے ذہنی اور جسمانی طور پر متاثر ہوئے، اقوام متحدہ

جنیوا(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔14 مارچ۔2016ء) اقوامِ متحدہ کی ذیلی تنظیم یونیسیف نے کہا ہے کہ شام کے 5 سالہ تنازعے سے 80 فیصد بچے بالواسطہ یا بلاواسطہ ذہنی اور جسمانی طور پر متاثر ہوئے ہیں جب کہ جنگ شروع ہونے کے بعد پیدا ہونے والے لاکھوں بچوں نے سوائے جنگ کے علاوہ کوئی دوسرا ماحول نہیں دیکھا۔غیر ملکی میڈیاکے مطابق یونیسیفکا کہنا ہے کہ بچے شدید غربت کی وجہ سے یا تو مسلح گروہوں میں شامل ہورہے ہیں، مزدوری کررہے ہیں یا پھر مجبورا شادی کررہے ہیں۔

تنظیم کے مطابق شام میں ایک تہائی بچوں کی عمر 18 برس سے کم ہے اور جنگ شروع ہونے کے بعد اب تک شام میں 37 لاکھ بچے پیدا ہوئے ہیں اور انہوں نے جنگ کے بادل، بھوک اور بیماری کے علاوہ کچھ اور نہیں دیکھا ہے۔ادارے کے مطابق اب تک 70 لاکھ بچے شدید غربت

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

14/03/2016 - 22:27:01 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان