پاکستان اور بھارت کوسندھ طاس معاہدے پر نظرثانی کرنا ہوگی‘ سندھ طاس معاہدہ کی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:36:44 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:33:20 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:32:29 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:30:19 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:30:19 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:23:22 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:22:15 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:22:15 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:20:14 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:20:14 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 22:18:23
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

پاکستان اور بھارت کوسندھ طاس معاہدے پر نظرثانی کرنا ہوگی‘ سندھ طاس معاہدہ کی شقوں میں بہت سی خامیاں ہیں اس میں گلیشئر کے پانی کا ذکر نہیں، ماحولیاتی مسائل بھی سامنے ہیں

پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں محمودالرشید کی میڈیا سے گفتگو

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔14 مارچ۔2016ء) پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں محمودالرشید نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت کو سرکریک اور کشمیر کے ساتھ ساتھ پانی کے مسئلے پر بھی جامع مذاکرات اورسندھ طاس معاہدے پر نظرثانی کرنا ہوگی کیونکہ سندھ طاس معاہدہ کی شقوں میں بہت سی خامیاں ہیں اس میں گلیشئر کے پانی کا ذکر نہیں، ماحولیاتی مسائل بھی سامنے ہیں۔

وہ پیر کودورہ بھارت سے واپسی پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کر رہے تھے پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں محمودالرشید نے کہا کہ جو لوگ یہ کہتے ہیں کہ بھارت کے ڈیم بنانے سے پاکستان متاثر نہیں ہوگا انہیں پاکستان کی جغرافیائی حالت کو ضرور دیکھ لینا چاہئے کیونکہ پاکستان کے دو دریاء بھارت سے ہوکر پاکستان آتے ہیں اور ان کے پانی

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

14/03/2016 - 22:23:22 :وقت اشاعت