آرٹیکل 6آئین اورپارلیمان کا دفاع نہیں کرسکا،جس کے خلاف آرٹیکل 6 کا مقدمہ ہوتا ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:40:03 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:38:24 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:35:35 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:29:30 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:26:30 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 21:26:30 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 20:56:56 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 20:33:02 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 20:24:24 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 20:22:44 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 20:22:44
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

آرٹیکل 6آئین اورپارلیمان کا دفاع نہیں کرسکا،جس کے خلاف آرٹیکل 6 کا مقدمہ ہوتا ہے وہ عدالت جانے سے انکار کرتا ہے۔چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی

اسلام آباد(ا ردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔14مارچ۔2016ء)چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے کہا ہے کہ آرٹیکل 6آئین اورپارلیمان کا دفاع نہیں کرسکا،جس کے خلاف آرٹیکل 6 کا مقدمہ ہوتا ہے وہ عدالت جانے سے انکار کرتا ہے۔اسلام آباد میں ایک تقریب سے خطاب میں میاں رضا ربانی نے کہا کہ ملک میں قانون کی برابری نہیں ہے ،ریاست نےخود کوزندہ رکھنا ہے توپارلیمنٹ کی بالادستی تسلیم کرناہوگی۔

سینیٹ چیئرمین کا کہنا تھا کہ اٹھارہویں ترمیم میں آرٹیکل 6کا دائرہ کاربھی بڑھایا گیا لیکن یہ آرٹیکل آئین اور پارلیمان کا دفاع کرنے میں ناکام ہے ، پارلیمان کو ا ج بھی اپنی بقاکی جنگ لڑنی پڑرہی ہے ، ایک مائنڈ سیٹ تمام پالیسیاں اپنے ہاتھ میں رکھنا چاہتا ہے۔ رضا ربانی نے کہا کہ ملک میں جاری انتہاپسندی اور دہشت گردی کی ایک وجہ طلبہ یونین پر پابندی بھی ہے، تعلیمی اداروں میں ترقی پسندخیالات پر پابندیاں لگائی گئیں جبکہ دوسری طرف دہشت گرد مائنڈ سیٹ یونیورسٹیز میں اپنا کام جاری رکھے ہوئے ہے۔ چیئرمین سینیٹ نے مزیدکہا کہ ٹریڈیونینز کا خاتمہ ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت کیا گیا، اسی لیے ریاست کے اندرموجود ریاست کی گرفت مضبوط ہوتی گئی۔

14/03/2016 - 21:26:30 :وقت اشاعت