اہل تشیع کے دفاع کے لیے کہیں بھی جا سکتے ہیں:ایرا نی صدر
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 14/03/2016 - 14:24:15 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 14:24:15 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 14:23:13 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 14:23:13 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 14:11:51 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 13:54:52 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 13:54:52 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 13:51:45 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 13:51:45 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 13:51:45 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 13:49:57
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اہل تشیع کے دفاع کے لیے کہیں بھی جا سکتے ہیں:ایرا نی صدر

’اہل بیت کے مزارات سرخ لکیر ہیں ان کا ہرممکن تحفظ کیا جائے گا، حسن روحانی کا تقریب سے خطاب

تہران(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔14 مارچ۔2016ء)ایران کے اصلاح پسند صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ اہل تشیع کو جہاں کہیں بھی دہشت گردوں سے خطرہ ہوا تو ایران ان کے دفاع کو ضروری پہنچے گا۔ان کا کہنا تھا ایران اہل تشیع کے دفاع کے لیے کسی بھی مقام پر مداخلت کر سکتا ہے۔ایرانی صدر نے یہ بات ایک ایسے وقت میں کہی ہے جب تہران پہلے ہی شام، عراق اور کئی دوسرے عرب ممالک میں کھلم کھلا مداخلت کا مرتکب ہے۔

ان تمام ملکوں میں ایرانی مداخلت کے پس پردہ اہل تشیع کے مفادات کا تحفظ بتایا جاتا ہے۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق ایرانی صدر حسن روحانی نے ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ”اہل بیت کے مزارات سرخ لکیر ہیں۔ ان

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

14/03/2016 - 13:54:52 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان