لاہور ہائیکورٹ نے سرکاری ملازمین کو شفاف ٹرائل کا موقع دئیے بغیر نوکریوں سے فارغ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر مارچ

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:47:13 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:47:06 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:42:51 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:39:57 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:39:57 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:39:54 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:39:54 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:39:54 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:29:37 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:29:02 وقت اشاعت: 14/03/2016 - 12:29:02
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

لاہور ہائیکورٹ نے سرکاری ملازمین کو شفاف ٹرائل کا موقع دئیے بغیر نوکریوں سے فارغ کرنے کے حوالے سے پیڈا ایکٹ کے خلاف دائر درخواست مسترد کر دی،،،عدالت نے درخواست گزار کو پنجاب سروس ٹربیونل سے رجوع کرنے کی ہدائت کر دی۔

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔14 مارچ۔2016ء)لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس فیصل زمان خان نے کیس کی سماعت کی۔درخواست گزار ملک ارشد کے وکیل شیراز ذکاء ایڈووکیٹ نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ پیڈا ایکٹ کا سیکشن پانچ اور سات آئین سے متصادم ہے۔ پیڈا ایکٹ کے ذریعے کسی بھی سرکاری ملازم کو وجہ بتائے بغیر گھر بھیجا جا سکتا ہے جو کہ آئین کی سنگین خلاف ورزی ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل دس

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

14/03/2016 - 12:39:54 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان