تین سو سے زائد مجرم لٹکا چکا کبھی ندامت محسوس نہیں ہوئی ، تارا مسیح
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار مارچ

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:40:59 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:39:05 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:39:05 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:37:48 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:37:48 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:37:48 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:36:07 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:36:07 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:36:06 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:34:37 وقت اشاعت: 13/03/2016 - 15:34:37
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

تین سو سے زائد مجرم لٹکا چکا کبھی ندامت محسوس نہیں ہوئی ، تارا مسیح

خاندانی جلاد ہوں چچا اور والد نے بھی ہزاروں مجرموں کو پھانسی دی کافی عرصے فارغ رہا سزائے موت سے پابندی اٹھنے کے بعد کام بہت بڑھ گیا،جیل میں پھانسی کا طریقہ کار انگریزوں کے ہی زمانے کا رائج کردہ ہے اس میں کوئی خاص تبدیلی نہیں آئی، بس حکم کی تعمیل کرتا ہوں فی پھانسی کبھی 500 روپے ملتا ہے تو کبھی سفر بھی پلے سے کرنا پڑتا ہے،انٹرویو

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 مارچ۔2016ء) معروف جلاد تارا مسیح نے کہا ہے کہ تین سو زائد مجرم لٹکا چکا ہوں کبھی ندامت محسوس نہیں ہوئی خاندانی جلاد ہوں چچا اور والد نے بھی ہزاروں مجرموں کو پھانسی دی کافی عرصے فارغ رہا سزائے موت سے پابندی اٹھنے کے بعد کام بہت بڑھ گیا ہے ایک انٹرویو میں جلدد تارا مسیح کا مزید کہنا ہے کہ تختے پر موجود شخص کا نام ، جرم معلوم نہیں ہوتا ۔

بس حکم کی تعمیل کرتا ہوں فی پھانسی کبھی 500 روپے ملتا ہے تو کبھی سفر بھی پلے سے کرنا پڑتا ہے ہر پھانسی سے قبل ریہرسل ہوتی ہے دم نکلنے کے باوجود مجرم کو نصف گھنٹہ تختہ پر دار لٹکائے رکھتے ہیں ایک سوال کے جواب میں تارا مسیح نے کہا کہ جیل میں پھانسی کا طریقہ کار انگریزوں کے ہی زمانے کا رائج کردہ ہے اس میں کوئی خاص تبدیلی نہیں آئی بلکہ فی پھانسی کا نرخ بھی اسی زمانے کا برقرار ہے جو تنخواہ کے علاوہ ملتا ہے ۔

میرے دادا کے دور میں ماضی فی پھانسی 20 روپے ملتے تھے کاغذات میں اب بھی یہی ریٹ درج ہے مگر جیل حکام کبھی 300 سے 500 روپے تک دے دیتے ہیں پھانسی چڑھانے سے قبل مجرم کا طبی معائنہ کیا جاتا ہے کپڑے اتار کر مجرم کا وزن کیا

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

13/03/2016 - 15:37:48 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان