لینڈ مافیا نے سکھر ،لاڑکانہ اور حید رآباد میں بورڈ کی 3910ایکڑ نہری زمین پر قبضہ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:54:03 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:54:03 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:52:51 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:51:54 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:51:54 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:50:33 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:50:33 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:50:33 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:49:23 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:47:38 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 19:45:55
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

لینڈ مافیا نے سکھر ،لاڑکانہ اور حید رآباد میں بورڈ کی 3910ایکڑ نہری زمین پر قبضہ کر رکھا ہے ،صدیق الفاروق

ماضی میں محکمے میں کی گئی کرپشن میں ملوث افسران کیخلاف کارروائی کیلئے کیسز نیب کو بھیج دیئے گئے ہیں،چیئرمین متروکہ املاک وقف بورڈ

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 نومبر۔2015ء)متروکہ املاک وقف بورڈ کے چیئرمین محمد صدیق الفاروق نے کہا ہے کہ موثر اور طاقت ور لینڈ مافیا نے سکھر ،لاڑکانہ اور حید رآباد میں بورڈ کی 3910ایکڑ نہری زمین پر قبضہ کر رکھا ہے ،جس کی وجہ سے بورڈ 40سے 60کروڑ روپے کی آمدنی سے محروم ہے ۔املاک بورڈ نے پورے ملک میں 8ارب روپے مالیت کی قبضہ کی گئی زمین واگزار کرائی ہے ،جس میں پنجاب میں 7ارب روپے اور کراچی میں ایک ارب روپے مالیت کی زمین شامل ہے ۔

ماضی میں محکمے میں جو کرپشن کی گئی ہے اس میں ملوث افسران اور دیگر کے خلاف کارروائی کے لیے کیسز نیب کو بھیج دیئے گئے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر بورڈ کے افسران ارشد سلیم ،ندیم دھاریجو اور سعید احمد قریشی موجود تھے ۔صدیق الفاروق نے کہا کہ اندرون سندھ میں بورڈ کی جس زمین پر قبضہ کیا گیاہے وہ دس سال قبل کیا گیا ۔

جب بورڈ اس زمین کی نیلامی یا اس کرایے پر دینے کا اعلان کرتا ہے اور اس زمین کے حصول کے خواہش مند افراد وہاں جاتے ہیں تو لینڈ مافیا کے افراد ان مارپیٹ کر بھگادیتے ہیں ۔مقامی پولیس اور انتظامیہ محکمے کی کوئی مدد نہیں کرتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ سندھ کے محکمہ ریونیو کے بعض افسران و اہلکار املاک بورڈ کے ساتھ تعاون نہیں کرتے اور ریکارڈ گم ہونے یا جل جانے کا بہانہ کرتے ہیں ۔

اسی وجہ سے زمین واگزار

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

13/11/2015 - 19:50:33 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان