انسانی حقوق کے علمبردار بھارت کا چہرہ ایک بار پھر بے نقاب ہوگیا، ورانسی شہر میں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ نومبر

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:18:08 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:03:31 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:03:31 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:03:31 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:02:24 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:02:24 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:50:03 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:50:03 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:49:04 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:49:04 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:49:04
پچھلی خبریں - مزید خبریں

انسانی حقوق کے علمبردار بھارت کا چہرہ ایک بار پھر بے نقاب ہوگیا، ورانسی شہر میں روسی خاتون پر تیزاب پھینک دیا گیا

نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 نومبر۔2015ء)انسانی حقوق کے علمبردار بھارت کا چہرہ ایک بار پھر بے نقاب ہوگیا،ریاست اترپردیش کے شہر ورانسی میں روسی خاتون پر تیزاب پھینک دیا گیا۔عالمی میڈیا کے مطابق انسانی حقوق کے علمبردار بھارت کا چہرہ ایک بار پھر بے نقاب ہوگیا۔مودی سرکار کے دور حکومت میں خواتین اوربچیوں کی عصمت دری عام سی بات ہے۔

بھارت میں غیر ملکی خواتین کی غیر محفوظ ہیں۔ ریاست اترپردیش میں ایک اور انسانیت سوز واقعہ پیش آگیا۔ اترپردیش کے شہر ورانسی میں روسی خاتون پر تیزاب پھینک دیا گیا۔روسی خاتون کو تشویشناک حالت میں اسپتال منتقل کردیا گیا۔اسپتال ذرائع کا کہنا ہے روسی خاتون کی حالت کے بارے ابھی کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا۔ ورانسی پولیس کے مطابق روسی خاتون کو مالک مکان کے بیٹے کی جانب سے تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

13/11/2015 - 15:02:24 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان