اسرائیل مصر گٹھ جوڑ نے غزہ کے دو ملین عوام کی زندگی اجیرن بنا دی ہے، انسانی حقوق ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ نومبر

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:03:31 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:03:31 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:02:24 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 15:02:24 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:50:03 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:50:03 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:49:04 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:49:04 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 14:49:04 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 13:20:22 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 12:25:31
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسرائیل مصر گٹھ جوڑ نے غزہ کے دو ملین عوام کی زندگی اجیرن بنا دی ہے، انسانی حقوق تنظیم

غزہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 نومبر۔2015ء) انسانی حقوق کی ایک تنظیم نے فلسطین کے محاصرہ زدہ علاقے غزہ کی پٹی سے متعلق مصری حکومت کی اختیار کردہ معاندانہ پالیسی پر شدید تنقید کرتے ہوئے اسے عالمی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی قرار دیا ہے۔ انسانی حقوق کی تنظیم کا کہنا ہے کہ اسرائیل اور مصر نے مل کر غزہ کی پٹی کے دو ملین لوگوں کی زندگی اجیرن بنا رکھی ہے۔

اطلاعات کے مطابق انسانی حقوق کیلئے کام کرنیوالے ادارے ڈیموکریٹک ہیومن رائٹس کی جانب سے جاری بیان میں خبردار کیا گیا ہے کہ مصر اور اسرائیل نے غزہ کی پٹی کی ناکہ بندی ختم نہ کی تو وہاں پرخوفناک انسانی المیہ رونما ہوسکتا ہے جس کی ذمہ داری ان دونوں ملکوں پرعائد ہوگی۔ بیان میں ہفتہ قبل مصری بحریہ کی فائرنگ سے غزہ کی پٹی میں ایک 17 سالہ لڑکے فراس محمد مقداد کا بھی حوالہ دیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ اسرائیلی فوجی مظالم کے بعد اب مصری فوج بھی غزہ کے بچوں

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

13/11/2015 - 14:50:03 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان