قرآن کے خلاف عدالتی حکم ،روسی پا رلیمنٹ نے عدالتی اختیا ر محدود کر دیئے
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ نومبر

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 13/11/2015 - 12:24:51 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 12:21:35 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 12:21:35 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 12:21:35 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 11:48:00 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 11:48:00 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 11:41:02 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 11:41:02 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 11:38:26 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 11:38:26 وقت اشاعت: 13/11/2015 - 11:38:26
پچھلی خبریں - مزید خبریں

قرآن کے خلاف عدالتی حکم ،روسی پا رلیمنٹ نے عدالتی اختیا ر محدود کر دیئے

ماسکو (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 نومبر۔2015ء)روس میں تینوں بڑے الہامی مذاہب سمیت مختلف عقائد کے صحیفوں پر آئندہ کوئی پابندی نہیں لگائی جا سکے گی۔ اس کا پس منظر یہ ہے کہ ایک روسی عدالت نے حال ہی میں متعدد قرآنی آیات کو ’انتہا پسندانہ‘ قرار دے دیا تھا۔روسی دارالحکومت ماسکو سے ملنے والی نیوز ایجنسی کے این اے کی رپورٹوں کے مطابق ملکی پارلیمان کے ایوان زیریں یا دْوما نے ایک ایسے قانونی مسودے پر تیسری مرتبہ بحث کے بعد اس کی حتمی منظوری دے دی، جس کے تحت روس میں آئندہ اسلام، مسیحیت اور یہودیت کے صحیفوں کے ساتھ ساتھ بدھ مت کی تحریری تعلیمات پر بھی ان میں درج احکامات کو انتہا پسندانہ قرار دے کر کوئی پابندی نہیں لگائی جا سکے گی۔

روسی دْوما میں یہ مسودہء قانون صدر ولادیمیر پوٹن کی طرف سے پیش کیا گیا تھا، جس کی منظوری کے بعد اب مسلمانوں کی مقدس کتاب قرآن، مسیحیوں کی انجیل اور یہودیوں کی توریت کے ساتھ ساتھ بدھ مت کی تحریری تعلیمات میں سے لیے گئے اقتباسات کو بھی نہ تو کوئی روسی عدالت ممنوع قرار دے سکے گی اور نہ ہی ان کی نشر و اشاعت پر کوئی پابندی لگائی جا سکے گی۔

کے این اے کی رپورٹوں کے مطابق روس میں اس نئی قانون سازی کا مقصد مختلف مذاہب کے صحیفوں کو ان کے خلاف ممکنہ عدالتی فیصلوں سے تحفط فراہم کرنا ہے۔

اس نئی قانون سازی کا پس منظر یہ ہے کہ بحرالکاہل کے روسی جزیرے سخالین میں اس سال اگست کے مہینے میں ایک عدالت نے ایک متنازعہ فیصلہ دے دیا تھا۔اس مقدمے کا محور ایک کتاب تھی، جس کا عنوان تھا: ’خدا سے کی جانے والی دعائیں: ان

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

13/11/2015 - 11:48:00 :وقت اشاعت