محکموں میں صوبے سے باہر کے لوگوں کو یہاں تعینات کیا جائے گاتو بلوچستان کی نوجوانوں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:43:55 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:42:08 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:40:55 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:36:40 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:26:43 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:26:43 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:25:37 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:25:34 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:13:31 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:13:30 وقت اشاعت: 12/11/2015 - 21:13:30
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کوئٹہ

کوئٹہ شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 23/01/2017 - 00:00:07 وقت اشاعت: 23/01/2017 - 12:31:25 وقت اشاعت: 23/01/2017 - 15:36:19 وقت اشاعت: 23/01/2017 - 15:38:41 وقت اشاعت: 23/01/2017 - 15:38:43 وقت اشاعت: 23/01/2017 - 16:20:46 کوئٹہ کی مزید خبریں

محکموں میں صوبے سے باہر کے لوگوں کو یہاں تعینات کیا جائے گاتو بلوچستان کی نوجوانوں کی حق تلفی ہوگی،چیف جسٹس بلوچستان ہائی کورٹ

بے روزگار نوجوانوں کی ایک کثیر تعداد موجود ہے، جسٹس محمد نور مسکانزئی

کوئٹہ ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 نومبر۔2015ء ) چیف جسٹس بلوچستان ہائی کورٹ جسٹس محمد نور مسکانزئی نے کہا ہے کہ اگر بلوچستان کے نوجوان بیرو زگارہونگے اور یہاں کے محکموں میں آسامیاں کی موجودگی کے باجود صوبے سے باہر کے لوگوں کو یہاں تعینات کیا جائے گاتو اس سے بلوچستان کی نوجوانوں کی حق تلفی ہوگی کیونکہ یہاں پر بے روزگار نوجوانوں کی ایک کثیر تعداد موجود ہے.۔

جس کو ان کے قابلیت کے مطابق روزگار ملنا ان کا آئینی حق ہے واپڈا حکام کیسکو کوئٹہ انجینئر ز40کے قریب خالی آسامیاں ہے بجائے اس پر واپڈا کے اس پریہاں تعیناتیاں عمل میں لاتی صوبے سے باہر کے انجینئرز کوجوکہ پہلے واپڈا کام کر رہے ہیں کو این او سی دینا لوکل انجینئرز کی حق تلفی ہے آسامیوں پر صوبے سے باہر کے لوگوں کو کیسکوتعیناتوں کیلئے دی جانے والی این او سی فوری طورپر کینسل کرکے ان آسامیوں پر بلوچستان کے بیروزگار انجینئر ز کی میرٹ پر تعیناتیاں عمل میں لائے بلوچستان کے کوٹے پر بلوچستان ہی کے نوجوانوں کا حق ہے یہ حکم بلوچستان ہائی کورٹ کے چیف جسٹس جسٹس محمد نور مسکانزئی اور جسٹس محمد ہاشم کاکڑ پر مشتمل بینچ نے نعیم الحق کلاچی ایڈوکیٹ کے آئینی درخواست نمبر 10/33.2015بر خلاف حکومت پاکستان بذریعہ واٹر اینڈ پاور گورنمنٹ آف بلوچستان بذریعہ چیف سیکرٹری

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12/11/2015 - 21:26:43 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان