سینیٹ آف پاکستان میں آزاد جموں و کشمیر یااے جے کے کونسل کے معاملات کو زیر بحث نہیں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 11/11/2015 - 20:07:21 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 20:02:59 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 20:02:59 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 20:02:59 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 20:00:15 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 20:00:14 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 19:55:45 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 19:55:04 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 19:55:04 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 19:55:04 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 19:53:03
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

سینیٹ آف پاکستان میں آزاد جموں و کشمیر یااے جے کے کونسل کے معاملات کو زیر بحث نہیں لایا جا سکتا، سینٹ کمیٹی میں انکشاف

کمیٹی کا سخت برہمی و حیرانی کا اظہار،آئندہ اجلاس میں وزیر برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان کو طلب کر لیا

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 نومبر۔2015ء) سینیٹ قائمہ کمیٹی برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹر پروفیسر ساجد میر کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا ۔قائمہ کمیٹی کے ایجنڈا میں کشمیر کونسل کے کام ،کارکردگی کے معاملات کے علاوہ دو عوامی عرضداشتوں کے معاملات شامل تھے۔چیئرمین کمیٹی و اراکین کمیٹی نے آزاد جموں اینڈ کشمیر کونسل سیکرٹریٹ کی طرف سے ادارے کے متعلق بھیجی گئی تفصیلات جس کے مطابق آزاد جموں کشمیر کی پاکستان کی پارلیمنٹ میں نمائندگی نہ ہو نے کی و جہ سے سینیٹ آف پاکستان میں آزاد جموں و کشمیر یااے جے کے کونسل کے معاملات کو زیر بحث نہیں لایا جا سکتاپر سخت برہمی و حیرانی کا اظہار کرتے ہوئے آئندہ اجلاس میں وزیر برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان کو طلب کر لیا۔

رکن کمیٹی سینیٹر رحمان ملک نے کہا کہ آزاد جموں و کشمیر کی ترقی و خوشحالی کیلئے بجٹ حکومت پاکستان فراہم کرتی ہے اور ان کے تحفظ کیلئے بارڈر پرہماری فوج تعینات ہے جسکا خرچہ بھی حکومت پاکستان برداشت کرتی ہے۔انہوں نے تجویز دی کہ اس حوالے سے وزارت قانون سے بھی رائے طلب کی جائے۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ ورلڈ بنک اور آئی ایم ایف پاکستان کو قرضہ دیتے ہیں تو ایک ایک پائی کا حساب بھی لیتے ہیں۔

فاٹا میں وفاق فنڈ فراہم کر کے اس کا آڈٹ کراتا ہے۔سینیٹر لیفٹیننٹ جنرل (ر) صلاح الدین ترمذی نے کہاکہ اس ضمن میں آئندہ اجلاس میں متعلقہ وزیر سے بریفنگ حاصل کی جائے۔اراکین کمیٹی کی متفقہ رائے سے کمیٹی کا اجلاس احتجاجاً ملتوی کر دیا گیا۔سیکرٹری برائے امور

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

11/11/2015 - 20:00:14 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان