عمر رسیدہ افراد میں طلاق لینے والوں کی تعداد میں اضافہ
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ نومبر

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 11/11/2015 - 16:19:37 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 16:19:37 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 16:19:36 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 16:18:41 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 16:18:41 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 16:16:49 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 15:12:58 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 14:59:25 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 14:39:02 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 14:39:02 وقت اشاعت: 11/11/2015 - 14:36:09
پچھلی خبریں - مزید خبریں

عمر رسیدہ افراد میں طلاق لینے والوں کی تعداد میں اضافہ

عمر رسیدہ افراد میں طلاق لینے کے عمل میں تیزی عمر میں اضافے کا باعث بن رہی ہے‘ماہرین

لندن(اُردو پوائنٹ تازہ ترین ۔۔ آئی پی اے ۔۔11 نومبر۔2015ء)دنیا میں جہاں طلاق دینے کی شرح میں کمی آ رہی ہے وہیں عمر رسیدہ افراد میں طلاق لینے والوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔آفس آف نیشنل سٹیٹسکس کے مطابق سنہ 1990 کی دہائی سے انگلینڈ اور ویلز میں 60 برس کی عمر میں طلاق دینے کی شرح میں اضافہ ہوا ہے۔ادارے کے مطابق بقایا آبادی میں اس رحجان میں کمی ہوئی ہے تاہم (سنہ 2012 میں اس میں معمولی اضافہ بھی ہوا)۔

برطانیہ اور ویلز میں سنہ 2011 میں تقریباً 9,500 مردوں نے اپنی بیویوں کو طلاق دی جو گذشتہ 20 سالوں کے مقابلے میں طلاق دینے کی تین چوتھائی شرح تھی۔اس عرصے میں برطانوی خواتین میں بھی طلاق لینے کی شرح میں مماثلت پائی گئی۔محققین کا کہنا ہے کہ عمر رسیدہ افراد میں طلاق لینے کے عمل میں تیزی عمر میں اضافے کا باعث بن رہی ہے۔برطانوی لا فرم کے جی ڈبلیو کے لیے کام کرنے والی ایک وکیل کیرن واکر کا کہنا ہے کہ لوگ اپنی ریٹائرمنٹ سے زیادہ کی امید رکھتے ہیں۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ لوگ اپنی عمر کے تیسرے حصے پر زیادہ توجہ دیتے ہیں۔

برسٹل میں قانونی مشیر کے طور پر کام کرنے والی باربرا بلوم فیلڈ کا کہنا ہے کہ شادی شدہ جوڑوں میں عمر کا فرق بعد کی زندگی کو متاثر کرتا

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

11/11/2015 - 16:16:49 :وقت اشاعت