اس وقت دنیا میں گروہی ،جماعتی اورحکومتی دہشتگردی کا انسانیت نشانہ بن رہی ہے،ہمیں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:41:32 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:36:44 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:36:44 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:36:44 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:33:34 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:33:34 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:33:34 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:32:12 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:32:12 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:32:12 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 22:30:12
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

اس وقت دنیا میں گروہی ،جماعتی اورحکومتی دہشتگردی کا انسانیت نشانہ بن رہی ہے،ہمیں مل کر دہشتگردی کیخلاف آواز بلند کرنی ہوگی، طاہر محمود اشرفی

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔9 نومبر۔2015ء) بین المذاہب بین المسالک مکالمہ کیلئے تمام مذاہب کی مرکزی قیادت کی کوششیں قابل قدر ہیں۔تمام آسمانی مذاہب کے مقدسات کا احترام ہی وہ نکتہ ہے جس سے تمام مذاہب کے درمیان ہم آہنگی پیدا کی جاسکتی ہے ۔ یہ بات پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین اور وفاق المساجد پاکستان (رجسٹرڈ) کے صدر حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے لندن میں ہونے والی انٹر نیشنل بین المذاہب کانفرنس کے موقع پر ذرائع ابلاغ سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

اس موقع پر مرکزی سیکرٹری جنرل صاحبزادہ زاہد محمود قاسمی بھی ان کے ہمراہ تھے۔ حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ اس وقت دنیا میں گروہی ،جماعتی اورحکومتی دہشتگردی کا انسانیت نشانہ بن رہی ہے۔ہمیں مل کر دہشتگردی کیخلاف آواز بلند کرنی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ انتہائی دکھ کی بات ہے کہ ہندوستان میں نہ صرف مسلمانوں بلکہ مسیحیوں،سکھوں کے ساتھ ظلم کی انتہاکردی گئی ہے اور عالمی دنیا کو اس پر اپنی خاموشی توڑنی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ مسلم نوجوان کو انتہاپسندی اور دہشتگردی سے نکالنا ہے تو فلسطین،کشمیر،شام سمیت تمام مسلم ممالک کے مسائل کوحل کرنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ عراق پر ٹونی بلیئر کی معافی کافی نہیں ہے۔برطانیہ ،امریکہ کو چاہئے کہ عراق کی عوام کو جینے کا اسی طرح حق دلوانے کی کوشش کریں جس طرح وہ صدام کے دور میں جی رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ شام کے مسئلہ کا جلد ازجلد حل کیا جائے اورجو قوتیں ارض حرمین الشریفین کی سلامتی اور استحکام کیخلاف سازشیں کررہی ہیں دنیا جان لے ان قوتوں کا سد باب کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے۔

عالمی دنیا نے ارض حرمین الشریفین اور سعودی عرب کیخلاف سازشیں کرنے والوں کو نہ روکا تودنیا انتہاپسندی اور دہشتگردی کا مزید نشانہ بنے گی۔انہوں نے کہا کہ امت مسلمہ کسی صورت اپنے مقدسات کی توہین برداشت نہیں کریگی اور نہ ہی کسی ملک یاگروہ کو یہ حق دیں گے کہ وہ اپنے تخریبی اور دہشتگردانہ عزائم سے ارض حرمین الشریفین کو نشانہ بنائیں۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ منیٰ حادثہ ایک افسوسناک حادثہ ہے اور ہمیں امید ہے کہ سعودی حکومت منیٰ حادثہ کی تحقیقات کو منظر عام پر لائے گی

09/11/2015 - 22:33:34 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان