پنجاب میں چاول اور کپاس کے چھوٹے کاشتکاروں کو 40ارب روپے کی خطیر رقم سے مالی امداد ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر نومبر

مزید تجارتی خبریں

وقت اشاعت: 09/11/2015 - 23:10:47 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 21:32:44 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 21:07:59 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 20:09:44 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 19:14:28 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 19:02:19 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 18:09:23 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 17:51:32 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 17:45:24 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 17:01:07 وقت اشاعت: 09/11/2015 - 16:54:35
- مزید خبریں

لاہور

پنجاب میں چاول اور کپاس کے چھوٹے کاشتکاروں کو 40ارب روپے کی خطیر رقم سے مالی امداد کی ادائیگی شروع

وزیراعلیٰ پنجاب کی نارووال اور شیخو پورہ کا دورہ ، کسان پیکیج کے تحت چھوٹے کاشتکاروں میں امدادی رقوم کے چیکوں کی تقسیم

لاہور ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔9 نومبر۔2015ء ) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے نارووال اور شیخو پورہ کا دورہ کیا اور وزیراعظم محمد نوازشریف کے تاریخ ساز کسان پیکیج کے تحت چھوٹے کاشتکاروں میں امدادی رقوم کے چیک تقسیم کیے۔وزیراعلیٰ نے چھوٹے کاشتکاروں کے لئے بنائے گئے ادائیگی مراکز کا بھی معائنہ کیا اور امدادی رقوم کے چیک کی تقسیم کے عمل کا جائزہ لیا۔

وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے نارووال اور شیخوپورہ میں کاشتکاروں کو امدادی رقوم کی تقسیم کی تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ زراعت کے فروغ کے بغیر پاکستان کی معیشت ترقی نہیں کر سکتی۔ کسان کی خوشحالی سے ہی پاکستان خوشحال ہوگا۔وزیراعظم نواز شریف نے زراعت کی ترقی اور کاشتکاروں کی خوشحالی کیلئے تاریخی کسان پیکیج دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ کروڑوں کسان پاکستان کے عوام کیلئے اناج اگاتے ہیں اورہمارے کسان ہمارے سروں کے تاج ہیں جو زمین سے اناج پیدا کرتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ کسانوں کے ہر نقصان کا ازالہ کریں گے اوراس ضمن میں وزیراعظم محمد نواز شریف کا کسان پیکیج کاشتکاروں کی فلاح و بہبود کیلئے تاریخ ساز اقدام ہے۔ کسان پیکیج پر عملدرآمد کیلئے پنجاب میں 40 ارب روپے کی خطیر رقم رکھی گئی ہے۔ کسان پیکیج کے تحت کسانوں کو کھاد کی بوری پر 500 روپے سبسڈی دی گئی ہے۔کپاس اور چاول کے چھوٹے کاشتکاروں کو 5 ہزار روپے فی ایکڑ کے حساب سے امداد دی جا رہی ہے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ کسان پیکیج کے تحت کاشتکاروں کو مالی امداد کی ادائیگی اور دیگر فلاحی پروگراموں میں شفافیت ہر صورت برقرار رکھی جائے گی۔ شفافیت برقرار نہ رکھنے والے افسروں کو گھر بھیج دیں گے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ عمران خان نے کسان پیکیج کو رکوانے کی کوشش کی۔ بنی گالہ میں بیٹھ کرعمران خان کو غریب کاشتکاروں کے دکھ کا احساس ہونا چاہیئے تھا۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم محمد نواز شریف نے عالمی سطح پر زرعی اجناس کی کساد بازاری کے پیش نظر کسانوں کیلئے تاریخ ساز کسان پیکیج دیاہے۔ عمران خان نے اس تاریخی پیکیج کو رکوانے کیلئے الیکشن کمیشن کو خط لکھا، الیکشن کمیشن نے عمران خان کی درخواست پر کسان پیکیج پر عملدرآمدروک دیاتھاتاہم حکومت نے الیکشن کمیشن کے فیصلہ کے خلاف عدالت سے رجوع کیا جس پر عدالت نے الیکشن کمیشن کے حکم کو کالعدم قرار دے دیا۔

وزیر اعظم کسان پیکیج کے تحت صوبہ پنجاب میں کسانوں کو کھاد، چاول اور کپاس پر40ارب کی سبسڈی دی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے جفا کش اور محنت کش کسان آنے والے وقتوں میں40ارب کی سبسڈی کو 400ارب روپے میں بدل دینگے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کے کسان پیکیج کے تحت صوبہ بھر میں چاول اور کپاس کے چھوٹے کاشتکارو ں میں40ارب روپے کی خطیر امدادی رقوم کی تقسیم کا آغاز ہوچکا ہے ،اس تاریخی ساز زرعی پیکیج سے لاکھوں خاندان مستفید ہونگے ۔

صوبہ بھر میں 5ہزار روپے فی ایکڑ کے حساب سے چاول اور کپاس کے کاشتکاروں کی مالی معاونت اور کھاد میں 500روپے فی بوری سبسڈی سے کسانوں کے نقصان کا ازالہ کیا جارہا ہے جس سے شعبہ زراعت اور ملکی معیشت مستحکم ہوگی اور ملک خوشحالی کی جانب گامزن ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ وفاقی اورصوبائی حکومت کے باہمی اشتراک سے کسانوں اور کاشتکاروں کو کھاد ، کپاس اور چاول کی کاشت کیلئے دی جانے والے امدادی رقوم کے پیکیج سے صوبہ بھر میں 11لاکھ80ہزار کسان مستفید ہونگے ۔

انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم کے کسان پیکیج کو عملی جامہ پہنانے کیلئے 20ارب روپے وفاقی حکومت جبکہ20ارب روپے حکومت پنجاب نے فراہم کئے ہیں جو کہ ہمارے محنتی اور جفاکش کسان آنیوالے وقتوں میں400ارب روپے میں بدل دیں گے۔ انہوں نے کہاکہ ضلع نارووال میں امدادی پیکج کے تحت 43ہزار528کسانوں میں تقریبا1ارب روپے کی خطیر رقم تقسیم کی جارہی ہے اوراس کام کا آغاز کردیا گیاہے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

09/11/2015 - 21:32:44 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان