”میں“ کی روش چھوڑ کر اجتماعی سوچ اپناتے ہوئے ”ہم“ کے راستے پر چلنا ہی اقبال ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار نومبر

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:41:15 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:40:00 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:40:00 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:40:00 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:38:46 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:38:44 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:38:44 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:35:45 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:35:45 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:35:45 وقت اشاعت: 08/11/2015 - 17:31:15
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

”میں“ کی روش چھوڑ کر اجتماعی سوچ اپناتے ہوئے ”ہم“ کے راستے پر چلنا ہی اقبال کا پیغام ہے‘شہبازشریف

موجودہ انفرادی اور اجتماعی سطح پر چیلنجز سے نمٹنے کیلئے اقبال کا پیغام آج پہلے سے کہیں زیادہ اہمیت کا حامل ہے , پاکستان کو درپیش دہشت گردی، انتہاپسندی اور فرقہ واریت کے مسائل کے تناظر میں اقبال کے فلسفہ پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے , ہمیں علامہ اقبال کے افکار پر عمل پیرا ہونے اور ملک کو بانیان پاکستان کے تصورات کے مطابق ڈھالنے کیلئے بھرپور جدوجہد کا عزم کرنا ہوگا , وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کا یوم اقبا پر پیغام

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔8 نومبر۔2015ء )وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ علامہ اقبال پاکستانی عوام کے دلوں میں بستے ہیں ، پاکستان کا بطور ایک آزاد ،اعتدال پسند ، جمہوری اور فلاحی ریاست کا قیام اقبال کے نظریات کا مرہون منت ہے ، اقبال ہی وہ واحد شخصیت ہیں جنہو ں نے برصغیر کے مسلمانو ں کیلئے ایک علیحدہ وطن کا نظریہ پیش کیا تاکہ وہ اپنی اقدار ، تہذیب اورمخصوص زندگی کے مطابق گزربسر کرسکیں ، ایک عظیم سکالر ہونے کے ناطے علامہ اقبال جدید اور قدیم تاریخ سے بخوبی واقف تھے اور تہذیبوں کے عروج و زوال پر گہری نظر رکھتے تھے ،مسلمانو ں کیلئے علیحدہ مملکت کے قیام کی ان کی تجویز برصغیر کے سیاسی سوال کے حل میں ان کی سیاسی بصیرت کی عکاس ہے،گذشتہ کئی دہائیوں کے واقعات ان کی دانشمندی کا ثبوت ہیں ،اس وقت پاکستان تاریخ کے نازک دور سے گزر رہا ہے۔

اسے دہشت گردی، انتہاپسندی، فرقہ واریت اور دیگر مسائل کا سامنا ہے،ان حالات میں فلسفہ اقبال پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت پہلے سے کہیں زیادہ بڑھ گئی ہے، ملک و قوم کی ترقی اور خوشحالی کیلئے ”میں“ کی روش چھوڑ کر اجتماعی سوچ اپناتے ہوئے ”ہم“ کے راستے پر چلنا ہے، علامہ اقبال کے اسی پیغام میں ملک و قوم کی ترقی و خوشحالی کا راز مضمر ہے-وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے علامہ اقبال کے یوم پیدائش پر اپنے پیغام میں کہا کہ آج پوری قوم علامہ ڈاکٹر محمد اقبال جو بیسوی صدی کے عظیم شاعر ،دانشور ، مفکر اور ایک عظیم مدبر تھے کا یوم پیدائش منارہی ہے ۔

موجودہ انفرادی اور اجتماعی سطح پر چیلنجز سے نمٹنے کیلئے اقبال کا پیغام آج پہلے سے کہیں زیادہ اہمیت کا حامل ہے - اقبال کی تعلیمات ہمارے لئے مشعل راہ ہیں اور اندھیروں میں رہنمائی فراہم کرتی ہیں -انہوں نے کہا کہ اقبال کی زیادہ تر شاعری نوجوانوں کے بارے ہیں جسے وہ مستقبل کا معمار اور انسانیت کیلئے امید کی کرن سمجھتے ہیں -وہ سمجھتے تھے کہ نوجوانوں کی اخلاقی اور مذہبی اقدار کے مطابق تربیت کی جائے تاکہ وہ قوت استعداد بڑھاسکیں ،نئے افق دریافت کریں اور نئی دنیا کو فتح کریں - وہ چاہتے تھے کہ نوجوان عظیم خواب دیکھیں اور ان خوابوں کی تعبیر کیلئے مسلسل جدوجہد کریں - انہو ں نے نوجوانوں کی کردار سازی پر بھی زور دیا تاکہ وہ خداداد صلاحیتوں کو بروئے کار لاسکیں -اقبال نے اپنی شاعری میں مختلف استعارے استعمال کئے تاکہ نوجوان ان سے متاثر ہوکر اپنا خاص مقام حاصل کریں اور اپنے اندر تعمیری سوچ پیدا کریں - علامہ اقبال نوجوانوں کیلئے ذہنی مصلح اور ایک رہبر کی حیثیت رکھتے ہیں اور وہ ان سے بہت کچھ سیکھ کر اعلی و ارفع مقاصد کے مطابق اپنی زندگیاں ڈھال سکتے ہیں - علامہ اقبال  اعتدال پسند اورانصاف پسند معاشرے کے حامی تھے جس میں بلا امتیاز

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

08/11/2015 - 17:38:44 :وقت اشاعت