افغان صدر اشرف غنی کے دورہ پاکستان کے موقع پر بہارہ کہو سے افغانستان 3 لاکھ ٹیلی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر جون

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 16/06/2015 - 00:10:33 وقت اشاعت: 16/06/2015 - 00:09:17 وقت اشاعت: 16/06/2015 - 00:09:17 وقت اشاعت: 16/06/2015 - 00:09:16 وقت اشاعت: 16/06/2015 - 00:07:33 وقت اشاعت: 16/06/2015 - 00:07:33 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 23:27:29 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 23:19:45 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 23:12:55 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 23:12:55 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 23:11:44
- مزید خبریں

اسلام آباد

افغان صدر اشرف غنی کے دورہ پاکستان کے موقع پر بہارہ کہو سے افغانستان 3 لاکھ ٹیلی فون کالز کیے جانے کا انکشاف، افغانستان سے بھی بہارہ کہو کے مختلف نمبرز پر ٹیلی فون کالز پکڑی گئیں، بہارہ کہو کا سروے کرایا جا چکا ہے جس سے ثابت ہوا ہے کہ کالعدم تنظیموں کے لوگ مارکیٹ سے زائد کرایہ دے کر یہاں مکانات کرائے پر حاصل کرتے ہیں جو اسلام آباد کی سیکیورٹی کیلئے خطرہ ہے ، حساس اداروں نے حکومت کو رپورٹ پیش کردی

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔15 جون۔2015ء) معتبر ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ افغانستان کے اشرف غنی کے دورہ پاکستان کے موقع پر اسلام آباد کے مضافاتی علاقے بہارہ کہو سے افغانستان میں 3 لاکھ ٹیلی فون کالز کی گئیں اور افغانستان سے بھی بہارہ کہو کے مختلف نمبرز پر ٹیلی فون کالز پکڑی گئیں جبکہ حساس اداروں نے حکومت کو رپورٹ دی ہے کہ بہارہ کہو کا ایک سروے کرایا جا چکا ہے جس سے یہ ثابت ہوا ہے کہ کالعدم تنظیموں کے لوگ مارکیٹ سے زائد کرایہ دے کر یہاں مکانات کرائے پر حاصل کرتے ہیں جو اسلام آباد کی سیکیورٹی کیلئے خطرہ ہے ۔

تفصیلات کے مطابق معتبر ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ افغانستان کے صدر اشرف غنی صدر منتخب ہونے کے بعد جب پاکستان کے پہلے دورے پر اسلام آباد آئے تو ان کی آمد سے قبل سیکیورٹی کے فول پروف انتظامات کو یقینی بنایا گیا تھا تاہم اس دوران 3 لاکھ ایسی ٹیلی فون کالز ٹریس کی گئیں جو بہارہ کہو سے افغانستان

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16/06/2015 - 00:07:33 :وقت اشاعت