موکلہ سے مصافحہ، ایرانی وکیل "زنا" کے الزام میں گرفتار
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر جون

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:43:57 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:43:57 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:43:57 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:40:10 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:40:10 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:38:26 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:38:26 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:25:21 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:18:15 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 13:55:58 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 13:47:24
پچھلی خبریں - مزید خبریں

موکلہ سے مصافحہ، ایرانی وکیل "زنا" کے الزام میں گرفتار

تہران(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 15 جون۔2015ء)ایرانی پولیس نے زیر حراست ایک خاتون سماجی کارکن آتنا فرقدانی سے ہاتھ ملانے کی پاداش میں اس کے وکیل محمد مقیمی کو "زنا" کے الزام میں گرفتار کرنے کے بعد جیل بھیج دیا ہے۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایڈووکیٹ محمد مقیمی نے حال ہی میں تہران کی "ایفین" جیل میں اپنی مْوکلہ آتنا فرقدانی سے ملاقات کی تھی جہاں ملاقات میں انہوں نے فرقدانی سے ہاتھ ملالیا تھا۔

ایران کے ایک نیوز ویب پورٹل "تقاطع" نے حراست میں لیے گئے وکیل محمد مقیمی کے ایک مقرب ذریعے کے حوالے سے بتایا ہے کہ مقیمی کو ہفتے کے روز ایفین جیل میں قید اپنی موکلہ آتنا فرقدانی سے مصافحہ کی پاداش میں حراست میں لینے کے بعد ان پر "زنا" جیسے سنگین جرم کا الزام عاید کیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ جیل عملے کی جانب سے مرتب کردہ ریکارڈ میں لکھا گیا ہے کہ آتنا فرقدانی کے وکیل کو "زنا" کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

گرفتاری کے بعد اسے کرج شہر کی رجائی نامی جیل منتقل کردیا گیا ہے۔خیال رہے کہ محمد مقیمی کی گرفتاری ان کی موکلہ کو بارہ سال نو ماہ قید

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15/06/2015 - 14:38:26 :وقت اشاعت