پاکستان کو گزشتہ سال کی نسبت شدید قحط کی صورتحال کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے ‘ماہرین ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر جون

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:27:00 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:23:57 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:23:57 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:18:15 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:18:15 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:10:44 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:10:44 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:10:44 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:09:08 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:09:08 وقت اشاعت: 15/06/2015 - 14:02:50
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:05 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:06 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:09 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:16 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:11 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:13 اسلام آباد کی مزید خبریں

پاکستان کو گزشتہ سال کی نسبت شدید قحط کی صورتحال کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے ‘ماہرین

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 15 جون۔2015ء) موسمیات کے بین الاقوامی ماہرین نے پیش گوئی کی ہے کہ پاکستان کو گزشتہ سال کی بہ نسبت شدید قحط کی صورتحال کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔ساوٴتھ ایشین موسمیاتی فورم (ایس اے ایس سی او ایف) کی جانب سے اس خطے میں موسمیاتی تبدیلی کے سالانہ مطالعے کے بعد پیش کی جانے والی رپورٹ میں یہ پیش گوئی کی گئی ہے جس نے ملکی ماہرین کو پریشان کردیا ہے۔

پاکستان محکمہ موسمیات کے سربراہ ڈاکٹر غلام رسول نے بتایا کہ ہمیں ملک کے جنوب میں نصف حصوں میں کم بارشوں کی توقع تھی، جس نے پہلے ہی قحط جیسی صورتحال نے اپنی گرفت میں لے رکھا ہے انہوں نے مطالعہ کے کچھ حصوں سے اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ چولستان، تھرپارکر اور بلوچستان کے کچھ حصوں میں صورتحال بدترین ہونے کا امکان ہے۔عالمی موسمیاتی ادارے (ڈبلیو ایم او) کی ایک علاقائی شاخ کے طور پر ساوٴتھ ایشین موسمیاتی فورم جنوبی ایشیائی ملکوں میں مون سون کی پیش گوئی اور موسمیاتی ضروریات کی نگرانی کرتا ہے۔

اس نے خبردار کیا کہ موسم گرما میں مون سون کی کمی اس خطے میں زراعت کی بنیاد پر قائم معیشت پر اثرانداز ہوسکتی ہے۔فورم کے موسمیاتی ماہرین کے مطابق جنوبی ایشیا کے جنوب مغربی، وسطی، مغربی علاقوں میں معمول سے کم بارشوں کا امکان ہے۔پاکستان کے محکمہ موسمیات کے سربراہ نے بتایا کہ ہم پاکستان میں بہت کم بارشیں دیکھ رہے ہیں جو تقریباً 20 سے 25 ملی میٹر تک ہوسکتی ہیں جو اس شدید قحط کی سی صورتحال میں ایک مدد معلوم ہوتی ہے تاہم یہ مدد بھی پائیدار ثابت نہیں ہوگی اس لیے کہ یہاں گرمی کی شدت کی وجہ سے بخارات بننے کی شرح 10 ملی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15/06/2015 - 14:10:44 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان