آزاد کشمیر احتساب بیورو نے اربوں روپے کی ادائیگیوں کے مرتکب محکمہ تعمیرات کے 12 ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر جون

آزاد کشمیر احتساب بیورو نے اربوں روپے کی ادائیگیوں کے مرتکب محکمہ تعمیرات کے 12 ایکسین اور 30 نائب مہتمم اکاؤنٹنٹ جنرل کے خلاف تحقیقات کا آغاز کر دیا

مظفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 15 جون۔2015ء) آزاد جموں و کشمیر احتساب بیورو نے اربوں روپے کی ادائیگیوں کے مرتکب محکمہ تعمیرات کے 12 ایکسین اور 30 نائب مہتمم اکاؤنٹنٹ جنرل کے عملہ کے خلاف تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے ، سیکرٹری ورکس اور اکاؤنٹنٹ جنرل اور ایڈیشنل چیف سیکرٹری (جنرل) کو نوٹس جاری کر دیئے گئے۔ سنسنی خیز انکشافات متوقع، احتساب بیورو نے سلیکشن بورڈ نمبر3 اور نمبر2 کا ریکارڈ بھی طلب کر لیا ہے۔

چیئرمین احتساب بیورو راجا غضنفر علی خان نے کہا کہ تعلیمی رخصت کی منظوری کے بغیر اعلیٰ فنی تعلیمی قابلیت ظاہر کر کے ترقیابیاں پانے والوں کے خلاف قانون اور ضابطے کے تحت کارروائی عمل میں لائی جائے گی، عوام الناس کو انصاف کی فراہمی ہمارے لئے عبادت کا درجہ رکھتی ہے ریاست میں کسی کو انصاف کی فراہمی میں رکاوٹ بننے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔

محکمہ تعمیرات عامہ میں کام کرنے والے پبلک سروس کمیشن پاس پروفیشل انجینئرز نے احتساب کے رو برو درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ سیکرٹریٹ ورکس اور اکاؤنٹنٹ جنرل آفس سے مجوزہ ریکارڈ سرٹیفکیٹس ، تعلیمی اسناد کی فراہمی میں رکاوٹ بننے والے اہلکاران کے خلاف سخت ترین کارروائی کی جائے ، آزاد جموں و کشمیر احتساب بیورو کے ایماندار آفیسران کو انکوائری اور انوسٹیگشن تفویض کر دی گئی ہے پبلک سروس کمیشن پاس پروفیشنل انجینئرز نے انجینئر افتخار احمد خلجی جو کہ پروفیشنل انجینئرز ایسوسی ایشن آف کشمیر (PEAK) کے سیکرٹری جنرل بھی ہیں کی وساطت سے دائر کردہ درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ بے روز گار انجینئرز کی تعلیم کے حصول پر والدین اور قوم کے لاکھوں روپے خرچ ہوتے ہیں وہ ڈگریاں تھامے روز گار کے حصول میں مارے مارے پھر رہے ہیں جبکہ آسامیاں کرنٹ چارج زائد از چھ ماہ اورسیئروں کے ذریعے پر کی گئی ہیں جو

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15/06/2015 - 13:05:29 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان