شاعر و مزاح نگار ابن انشاء کا88واں یوم پیدائش کل منایا جائے گا
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار جون

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:54:12 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:54:11 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:53:11 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:53:11 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:53:11 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:59 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:53 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:53 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:53 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:49 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:41:56
پچھلی خبریں - مزید خبریں

شاعر و مزاح نگار ابن انشاء کا88واں یوم پیدائش کل منایا جائے گا

جہانیاں(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 14 جون۔2015ء)اردو ادب کے عظیم شاعر و مزاح نگار ابن انشاء کا88واں یوم پیدائش 15جون بروز پیر منایا جائے گا اس سلسلے میں ادبی حلقوں میں مختلف تقریبات کا اہتمام کیا جائے گا۔ابن انشاء جن کا اصل نام شیر محمد خان تھا 15جون 1927ء کو جالندھر میں پیدا ہوئے وہ اپنی ذات میں ایک انجمن تھے وہ بیک وقت صحافی،شاعر،افسانہ نگار،کالم نگار اور سفر نامہ نگارتھے انہیں ان کی معروف غزل ” انشاء جی اٹھو اب کوچ کرو “ نے شہرت کی بلندیوں تک پہنچا دیا۔

ابن انشاء ملک کے معروف اخبارات و جرائد میں کالم لکھتے رہے ہیں بطور شاعر ان کے متعدد مجموعے ” دل وحشی “ ” چاند نگر “ اور ” اس بستی کے کوچے میں “ شائع ہو چکے ہیں ابن انشاء نے یونیسکو کے مشیر کی حیثیت سے مختلف یورپی و ایشیائی ممالک کے تفصیلی دورے کیے جن کے احوال انہوں نے اپنے سفرناموں ” ابن بطوطہ کے تعاقب میں “چلتے ہو تو چین کو چلیے “ ” دنیا گول ہے “ ” نگری نگری پھرا مسافر “ اور ” آوارہ گرد کی ڈائری “ میں اپنے مخصوص طنزیہ اور مزاحیہ انداز میں تحریر کیا۔

ابن انشاء کے کالموں اور خطوط کے مجموعوں پر مشتمل کتب ” خمار گندم “ ” اردو کی آخری کتاب “ اور ” خط انشاء جی کے “ قارئین میں بے پناہ پزیرائی حاصل کر چکی ہیں۔ابن انشاء 11 جنوری 1978ء کو لندن میں انتقال کر گئے انہیں کراچی میں دفن کیا گیا ہے

14/06/2015 - 15:47:59 :وقت اشاعت