’سنوڈن کی فائلیں برطانوی جاسوسوں کی منتقلی کی وجہ بنیں‘
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار جون

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 14/06/2015 - 16:08:50 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 16:08:50 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 16:08:50 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:49 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:49 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:46 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:46 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 15:47:46 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 14:35:30 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 13:59:45 وقت اشاعت: 14/06/2015 - 13:59:45
پچھلی خبریں - مزید خبریں

’سنوڈن کی فائلیں برطانوی جاسوسوں کی منتقلی کی وجہ بنیں‘

ایڈورڈ سنوڈن پر سرکاری مواد چرانے، سمیت خفیہ معلومات افشا کرنے کے الزامات میں امریکی حکام کو مطلوب ہیں

لندن ( اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 14 جون۔2015ء)برطانوی حکومت کا کہنا ہے کہ امریکی ادارے این ایس اے کے سابق ملازم کی جانب سے افشا کی جانے والی دستاویزات کی وجہ سے برطانیہ کو اپنے جاسوسوں کو منتقل کرنا پڑا تھا۔ خطرہ تھا کہ چینی اور روسی حکام ایڈورڈ سنوڈن کی جانب سے افشا کی گئی ان دستاویزات کو پڑھ سکتے ہیں۔برطانوی اخبار سنڈے ٹائمز کا کہنا ہے کہ روس اور چین ان کمپیوٹر فائلوں کی انکرپشن کا توڑ ڈھونڈنے میں کامیاب ہو چکے ہیں۔

حکومتی ذرائع نے برطانوی نشریاتی ادارے کو بتایا کہ کچھ ممالک کے پاس ایسی ’معلومات‘ تھیں جن سے برطانوی ایجنٹس یا جاسوسوں کا پتہ چل سکتا تھا اور اسی وجہ سے انھیں منتقل کیا گیا۔تاہم ذرائع نے کہا اس بات کا ’کوئی ثبوت نہیں ہے‘ کہ کسی بھی جاسوس کو کوئی نقصان پہنچا ہو۔برطانوی حکومت کے ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ روس اور چین نے جو معلومات حاصل کی ہیں اس کا مطلب یہ ہے کہ ’وہ ہمارے طریقہ کار کے بارے میں جان گئے ہیں‘ اور اس وجہ سے برطانیہ ’انتہائی ضروری معلومات‘ حاصل نہیں کر پا رہا۔

این ایس اے کے اس سابق ملازم نے 2013 میں اس وقت امریکہ چھوڑ دیا تھا جب انھوں نے امریکہ کے خفیہ ادارے نیشنل سکیورٹی ایجنسی کے راز افشا کیے تھے جن میں بتایا گیا تھا کہ ایجنسی بڑے پیمانے پر امریکہ اور دنیا کے مختلف ممالک میں فون اور انٹرنیٹ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

14/06/2015 - 15:47:46 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان