1967ء کے بعد سے اب تک 1 لاکھ فلسطینی بچوں کو صہیونی جیلوں میں ڈالا گیا،ملٹری کورٹ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ جون

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 12/06/2015 - 14:28:10 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 14:21:52 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 13:36:22 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 13:20:13 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 13:16:09 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 13:16:09 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 13:16:09 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 13:14:58 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 13:10:56 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 13:10:56 وقت اشاعت: 12/06/2015 - 13:10:56
پچھلی خبریں - مزید خبریں

1967ء کے بعد سے اب تک 1 لاکھ فلسطینی بچوں کو صہیونی جیلوں میں ڈالا گیا،ملٹری کورٹ واچ

رام اللہ (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 12 جون۔2015ء) انسانی حقوق کیلئے کام کرنیوالے ادارے نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ 1967 ء کی جنگ کے بعد اسرائیل نے منظم انداز میں فلسطینی بچوں کیساتھ بدسلوکی کا سلسلہ شروع کیا اور اب تک 95 ہزار بچوں کو جیلوں میں ڈالا گیا ہے۔ملٹری کورٹ واچ کی جاری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی فوجی عدالتوں میں فلسطینی بچوں کیساتھ ہونیوالی بدسلوکی کی مثال دنیا کے کسی دوسرے ملک میں نہیں ملتی ۔

اسرائیلی فوجی عدالتیں کم عمر فلسطینی بچوں کے مقدمات ڈیل کرتی ہیں جو کہ انسانی حقوق کی سنگین پامالی ہے۔ 1967 ء کے بعد سے 2014 ء کے اختتام تک ایک لاکھ کے قریب فلسطینی بچوں کا فوجی عدالتوں میں ٹرائل کیا گیا۔انسانی حقوق کی تنظیم نے رپورٹ کی ایک نقل اقوام متحدہ کے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12/06/2015 - 13:16:09 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان