تھانہ کلچر کی تبدیلی۔تھانوں میں استعمال ہونے والے11اہم رجسٹر کمپیوٹرائز کر دیے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جون

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 10/06/2015 - 23:02:08 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 23:02:08 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 22:59:02 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 22:59:02 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 22:59:02 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 22:51:35 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 22:51:35 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 22:49:49 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 22:49:49 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 22:48:22 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 22:48:22
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

تھانہ کلچر کی تبدیلی۔تھانوں میں استعمال ہونے والے11اہم رجسٹر کمپیوٹرائز کر دیے گئے ہیں :ڈاکٹر عمر سیف

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 10 جون۔2015ء) پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے چیئرمین ڈاکٹر عمر سیف نے کہا ہے کہ ہمارے تھانوں میں تبدیلی لانے کے راستے میں ایک اہم رکاوٹ ریکارڈ کے اندراج کے لئے پرانا اور روائتی رجسٹروں کا نظام بھی ہے۔ اس وقت ایک تھانے میں مختلف نوع کے25رجسٹر استعمال ہو رہے ہیں جن میں معمول کے اندراجات اور انکی دیکھ بھال پر نہ صرف کثیر سرمایہ خرچ ہو رہا ہے بلکہ اس پر وقت اور محنت بھی زیادہ لگتی ہے۔

تاہم ان خامیوں پر قابو پانے کے لئے پی آئی ٹی بی نے 25میں سے 11اہم رجسٹروں کو کمپیوٹرائز کر دیا ہے جن پر محکمانہ نظر ِ ثانی کی جا رہی ہے۔ وہ آج اپنے دفتر میں ایک اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت ایف آئی آر کے اندراج سے لیکر مجرمان کو جیل بھجوانے تک پولیس کوایک طویل کاغذی کارروائی مکمل کرنا پڑتی ہے۔ تاہم مدعی یا عوام کو اس نظام کا نقصان اس طرح بھی ہوتا ہے کہ ریکارڈ میں کسی بھی مرحلے پر ممکنہ تحریف یا ردو بدل کی وجہ سے بعض اوقات ظالم مظلوم اور مظلوم ظالم بن جاتا ہے۔

نیز عدالتوں میں مقدمات لٹک جاتے ہیں۔لیکن کمپیوٹرائزڈ نظام سے ان خامیوں کا خاتمہ ہو گا، انصاف کی فراہمی تیز ہو گی اور قیمتی سرمائے کے ساتھ وقت کی بھی بچت ہو گی۔انہوں نے کہا کہ اس وقت تھانوں میں ایف آئی آر رجسٹر، روزنامچہ تھانہ، رجسٹر روپوشاں و مفروراں،

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

10/06/2015 - 22:51:35 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان