مسلم لیگ (ن) کے حکومت میںآ نے کے بعد معیشت میں بہتری، مہنگائی میں کمی، فی کس آمدنی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جون

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:38:36 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:37:06 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:37:06 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:37:06 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:35:13 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:35:13 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:35:13 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:28:56 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:17:59 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:16:37 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 18:16:37
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:15 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:19 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:54 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:56 اسلام آباد کی مزید خبریں

مسلم لیگ (ن) کے حکومت میںآ نے کے بعد معیشت میں بہتری، مہنگائی میں کمی، فی کس آمدنی میں اضافہ، روپے کی قدر مستحکم ہوئی ، احتساب کے نظام کو مزید موثر بنانے کی ضرورت ہے، رئیل اسٹیٹ کے شعبے کو ٹیکس نیٹ میں لایا جائے، چھوٹے کسانوں کو مراعات دی جائیں،پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رکن سردار اویس احمد خان لغاری کا قومی اسمبلی میں بجٹ پر بحث کے دوران اظہار خیال

اسلام آباد ۔ 10 جون (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 10 جون۔2015ء) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رکن سردار اویس احمد خان لغاری نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت آنے کے بعد معیشت میں بہتری، مہنگائی میں کمی، فی کس آمدنی میں اضافہ، روپے کی قدر میں استحکام آیا ہے، گرے ٹریفک کا خاتمہ کر دیا گیا ہے، توانائی کے شعبے میں بہتری آئی ہے، امن و امان کے قیام کے لئے اپیکس کمیٹیوں کو فعال بنانے میں کردار ادا کیا ہے، جب تک دہشت گردوں کا گٹھ جوڑ نہیں ٹوٹے گا امن نہیں آئے گا، پاکستان سے لوٹا ہوا ملک کا پیسہ جب تک نہ روکا گیا، ملک میں سرمایہ کاری نہیں آئے گی، احتساب کے نظام کو مزید موثر بنانے کی ضرورت ہے، سارا کالا دھن رئیل اسٹیٹ کے کاروبار میں لگایا جاتا ہے اس شعبے کو ٹیکس نیٹ میں لایا جائے، چھوٹے کسانوں کو مراعات دی جائیں۔

بدھ کو قومی اسمبلی میں وفاقی بجٹ 2015-16ء پر بحث میں حصہ لیتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے رکن سردار اویس احمد خان لغاری نے کہا کہ بجٹ سیشن کی کارروائی تک تمام ٹی وی چینلز کو براہ راست رسائی احسن اقدام ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اس بات کو مدنظر رکھنا چاہیے کہ جب ہماری حکومت نے اقتدار سنبھالا تو اس وقت معیشت کی حالت کیا تھی اور اب کیا ہے، توانائی کا شعبہ بہتر ہوا ہے، مہنگائی میں کمی آئی ہے، افراط زر قابو میں ہے، فی کس آمدنی میں اضافہ ہوا ہے، جی ڈی پی نمو ماضی کے مقابلے میں چار فیصد سے بڑھ گئی ہے، روپے کی قدر مستحکم ہوئی ہے، پی ایس ڈی پی کا حجم 1500 ارب روپے سے بڑھ گیا ہے جو معیشت کی بہتری کی علامت ہے، ملک کے 53 لاکھ خاندانوں کو سوشل سیکورٹی نیٹ ورک میں لایا جا رہا ہے۔



اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

10/06/2015 - 18:35:13 :وقت اشاعت