اسلام آباد ہائی کورٹ نے سر کا ری افسرو ں کی ترقیو ں با رے سی ایس بی اجلاس کی منٹس ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جون

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:32:33 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:30:37 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:26:03 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:26:03 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:23:11 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:17:48 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:17:48 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:17:48 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:15:27 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:15:27 وقت اشاعت: 10/06/2015 - 17:15:27
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:15 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:19 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:54 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:56 اسلام آباد کی مزید خبریں

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سر کا ری افسرو ں کی ترقیو ں با رے سی ایس بی اجلاس کی منٹس سربمہر لفافے میں طلب کرلیں

کیا عدالت وزیراعظم کی منظوری کے بعد ترقیوں کو کالعدم قرار دے سکتی ہے، عدا لتی استفسا ر

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 10 جون۔2015ء) اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایک سینئر بیورو کریٹ کی جانب سے گریڈ 19،20اور 21 میں ترقیوں کے حوالے سے سینٹرل سلیکشن بورڈ کی سفارشات پر دائر درخواستوں پر سی ایس بی اجلاس کی منٹس سربمہر لفافے میں طلب کرلیں ہیں ۔ بدھ کے روز جسٹس شوکت عزیز صدیقی پر مشتمل سنگل بینچ نے ڈی آئی جی اسلام آباد پولیس آفتاب احمد چیمہ ، ایف سی کمانڈنٹ غنی الرحمان اور ڈائریکٹر آئی ایس آئی عبدالصمد سمیت دیگر افسران کی جانب سے دائر درخواستوں کی سماعت کی درخواست گزار کی جانب سے عبدالرحمان صدیقی ایڈووکیٹ جبکہ وفاق کی جانب سے ایڈیشنل اٹارنی جنرل افنان کریم کنڈی عدالت میں پیش ہوئے ۔

عبدالرحمان صدیقی نے دلائل دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ کس طریقہ کار کے تحت افسران کو ترقیاں دی گئی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ میرے موکلین ان تمام معیارات پر پورا اترتے ہیں جس کے تحت انہیں ترقیاں دینی چاہیں تھیں لیکن اس کے باوجود میرے موکلین سے امتیازی سلوک روا رکھا گیا اور میرٹ پر پورا اترنے کے باوجود

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

10/06/2015 - 17:17:48 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان