بلدیاتی انتخابات کے تیسرے مرحلے کے انتخابات کوشفاف بنایا جائے،رشیدخان ناصر ،
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ دسمبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 26/12/2014 - 19:04:32 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 19:01:12 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 19:01:12 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 18:57:19 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 18:57:19 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 18:56:07 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 18:56:07 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 18:44:38 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 18:43:53 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 18:43:53 وقت اشاعت: 26/12/2014 - 18:43:53
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کوئٹہ

کوئٹہ شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 22/02/2017 - 11:01:27 وقت اشاعت: 22/02/2017 - 11:01:31 وقت اشاعت: 22/02/2017 - 11:02:55 وقت اشاعت: 22/02/2017 - 11:01:33 وقت اشاعت: 22/02/2017 - 11:01:35 وقت اشاعت: 22/02/2017 - 12:16:01 کوئٹہ کی مزید خبریں

بلدیاتی انتخابات کے تیسرے مرحلے کے انتخابات کوشفاف بنایا جائے،رشیدخان ناصر ،

اس مرتبہ انتخابات میں دھاندلی کی گئی توسخت احتجاج کیاجائیگا، ترجمان آل پارٹیز ڈیموکرٹیک الائنس

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔26دسمبر 2014ء)آل پارٹیز ڈیموکرٹیک الائنس کے ترجمان رشیدخان ناصر نے کہاہے کہ بلدیاتی انتخابات کے تیسرے مرحلے کے انتخابات کوشفاف بنانے کامطالبہ کرتے ہوئے کہاہے کہ اگراس مرتبہ انتخابات میں دھاندلی کی گئی توسخت احتجاج کیاجائیگایہ بات انہوں نے جمعہ کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی انہوں نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات جن کاانعقاد ایک سال قبل ہواتھااوراب تیسرے مرحلے میں مخصوص نشستوں پر31دسمبرکوانتخابات ہورہے ہیں انہوں نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات ایک سال قبل سپریم کورٹ کے حکم کے تحت ہوئے تھے صوبائی حکومت تواس وقت انتخابات کرانے کی مخالف تھی مگراس وقت کے چیف سیکرٹری نے سپریم کورٹ میں جاکر بلدیاتی انتخابات کرانے کی یقین دہانی کرائی تھی مگراب صوبائی حکومت بلدیاتی انتخابات کرانے کاکریڈیٹ لے رہی ہے انہوں نے کہاکہ صوبائی حکومت میں شامل دوجماعتوں کی منفی پالیسی کی وجہ سے گزشتہ ایک سال بلدیاتی انتخابات لٹکھے ہوئے ہیں انہوں نے کہاکہ گزشتہ بلدیاتی انتخابات میں بھی صوبائی حکومت انتظامیہ اورالیکشن کمیشن کی جانب سے جانب داری کامظاہرہ کیاگیاتھااوراب بلدیاتی انتخابات ہونے جارہے ہیں توہم واضح کردیناچاہتے ہیں کہ اگراس مرتبہ انتخابات میں جانبداری یادھاندلی کی کوشش کی گئی توسخت احتجاج کیاجائیگا انہوں نے کہاکہ 6ماہ قبل ہونے والے انتخابات میں ڈسٹرکٹ کونسل کوئٹہ میں9کونسلروں نے ووٹ کاسٹ کئے مگربیلٹ بکس سے 10ووٹ برآمد ہوئے جس پرہم نے شدیداحتجاج کیاہمارے احتجاج پرہمیں تحریری طورپریقینی دہانی کرائی گئی کہ دوبارہ انتخابات ہونگے مگرپھرانہی دس ووٹوں کی بنیاد پرنتائج جاری کردئیے گئے جس کے تحت ایک گروپ کو5اوردوسرے کو4ووٹ ملے انہوں نے کہاکہ ہم واضح کرناچاہتے ہیں کہ اب ایک کونسلر وفات پاچکے ہیں جس کے بعد دونوں گروپوں کے 4,4ووٹ ہے اورانہی 8ووٹوں کی بنیاد پرانتخابات کرائے جائے انہوں نے کہاکہ ہم صوبائی حکومت اورالیکشن کمیشن سے مطالبہ کرتے ہیں کہ انتخابات کو شفاف بنایاجائے اگراس مرتبہ جانب داری کامظاہرہ کیاگیاتوسخت احتجاج کاحق محفوظ رکھتے ہیں انہوں نے کہاکہ انتخابات میں غیرجانبداراورسیاسی وابستگی نہ رکھنے والے عملہ تعینات کیاجائے انہوں نے کہاکہ ہرنائی میں کوئلہ کے ذخائرکے حوالے سے کاروباری معاملے کو سیاسی معاملہ بنانے سے گریز کیاجائے یہ ایک کاروباری مسئلہ ہے اس سے کاروبارتک محدود رکھاجائے ایک سوال پرانہوں نے کہاکہ ہماری کوئٹہ میٹروپولٹین کارپوریشن میں پوزیشن مستحکم ہے اورہم 6میں سے 4مخصوص نشستے جیتنے کے حوالے سے پرامیدہے جبکہ ڈسٹرکٹ کونسل میں ہمارے اورمخالف گروپ کے 4,4ووٹ برابر ہے یہاں بھی پوزیشن بہترہے ایک سوال پرانہوں نے کہاکہ ہم جمہوریت پسند ہے اورجمہوری جدوجہد پریقین رکھتے ہیں اورآئین اورقانون کے تحت جدوجہد کررہے ہیں ہم اصول اورقائدے کی بات کرتے ہیں ایک سوال پرانہوں نے کہاکہ گزشتہ ڈیڑھ سال کے دوران کوئٹہ کی حالت خراب کردی گئی ہے کوئٹہ میٹروپولٹین کارپوریشن شہرکی ترقی اورعوام کے مسائل حل کرنے میں ناکام ہوئی ہے انہوں نے کہ بلدیات کی وزارت جس جماعت کے پاس ہے اس کی وزیرہی میٹروپولٹین کارپوریشن کے ایڈمنسٹریٹر مقررکرتے ہیں وہ شہرمیں ٹریفک کابھی مسئلہ حل نہیں کرپائے۔

26/12/2014 - 18:56:07 :وقت اشاعت