کوئٹہ ، اغواء برائے تاؤان ٹارگٹ کلنگ ،جرائم کے دیگر واقعات میں ماضی کی نسبت کمی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات دسمبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:29:13 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:25:46 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:24:01 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:24:01 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:24:01 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:22:04 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:20:05 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:20:05 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:20:05 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:18:20 وقت اشاعت: 25/12/2014 - 23:16:27
- مزید خبریں

کوئٹہ

کوئٹہ شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:16 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:17 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 12:46:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 14:33:53 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 14:33:54 کوئٹہ کی مزید خبریں

کوئٹہ ، اغواء برائے تاؤان ٹارگٹ کلنگ ،جرائم کے دیگر واقعات میں ماضی کی نسبت کمی ہوئی، عبدالرزاق چیمہ،

نفری کی کمی کے باعث اکثر مشکلات درپیش آتی ہیں، جلد مزید چار تھانے قائم، نفری میں اضافہ کیا جائیگا، مولانا فضل الرحمن پر خود کش حملے کیخلاف تاحال کوئی پیش رفت نہیں ہوئی، سی سی پی او کوئٹہ

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔25دسمبر 2014ء) سی سی پی او کوئٹہ عبدالرزاق چیمہ نے کہا ہے کہ کوئٹہ شہر میں اغواء برائے تاؤان ٹارگٹ کلنگ اور جرائم کے دیگر واقعات میں ماضی کی نسبت کمی ہوئی ہے ،پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ میں اضافہ ہوا، کوئٹہ شہر میں نفری کی کمی کے باعث اکثر اوقات مشکلات درپیش آتی ہیں، آنیوالے وقت میں مزید چار تھانے اور نفری میں اضافہ کیا جائیگا، رپورٹ درج کرنیوالے کسی بھی شخص کی لاش نہیں ملی جن افراد کی لاشیں پشتون علاقوں سے ملی ہیں ان کا تعلق افغان مہاجرین کی ہے ،مولانا فضل الرحمن پر خودکش حملے کیخلاف تاحال کوئی پیشرفت نہیں ہوئی۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے صحافیوں کا ایک گروپ سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کیا ‘انہوں نے کہا کہ 2014میں صو بائی حکومت کی تعاون اور سیکورٹی اداروں کے ایک دوسر ے سے رابطے پر جرائم پر اگر100فیصد کامیاب حاصل نہیں کی تو 40سے50فیصد تک کامیاب ہوسکے ہیں انہوں نے کہاکہ ماضی میں جن افراد کی مسخ شدہ لاشیں ملتے تھے اب ان کا ملنا بند ہوچکا ہے اور مختلف علاقوں سے جو اس وقت 37لاشیں ملی ہیں وہ مقامی لوگ نہیں افغان مہاجرین ہے جو اکثر قبائلی جھگڑوں اور دیگر حوالے سے قتل ہو جاتے ہیں انہوں کہا کہ ان لاشوں میں بعض افراد کی شناخت بھی نہیں ہوسکتے انہوں نے کہاکہ ماضی میں اغواء برائے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

25/12/2014 - 23:24:01 :وقت اشاعت