پنگریو گرڈا سٹیشن سے منسلک شہروں ا ور 500سے زائد دیہاتوں میں بجلی کی اچانک اور بار ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ دسمبر

مزید مقامی خبریں

وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:32:41 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:25:25 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:25:25 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:19:09 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:19:09 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:17:31 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:16:09 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:16:09 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:16:09 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:10:20 وقت اشاعت: 24/12/2014 - 23:05:51
- مزید خبریں

پنگریو گرڈا سٹیشن سے منسلک شہروں ا ور 500سے زائد دیہاتوں میں بجلی کی اچانک اور بار بار ٹرپنگ کا سلسلہ شدت اختیار کر گیا

پنگریو ( اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔24دسمبر 2014ء) پنگریو گرڈا سٹیشن سے منسلک شہروں ا ور پانچ سو سے زائد دیہاتوں میں بجلی کی اچانک اور بار بار ٹرپنگ کا سلسلہ شدت اختیار کر گیا ہے جس کی وجہ سے صارفین کی لاکھوں روپے مالیت کی الیکٹرانک اشیاء جل گئی ہیں جبکہ حیسکو کی کروڑوں روپے کی مالیت کی تنصیبات میں بھی فنی خرابی پیدا ہو نے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے حیسکو انچارج نے کہا ہے کہ تیس سال پرانی بجلی کی تاریں اور دیگر آلات تبدیل نہ ہو نے کے باعث ٹرپنگ ہورہی ہے اور یہ فرسودہ و پرانے آلات عوام کے ساتھ ساتھ حیسکو عملے کی جانوں کے لئے بھی خطرہ بن گئے ہیں اس ضمن میں پنگریو شہر اور ملحقہ قصبوں و دیہاتوں میں بجلی کی بار بار اور اچانک ٹرپنگ کے باعث صارفین شدید پریشانیوں کا شکار ہو گئے ہیں کیونکہ ان کی لاکھوں روپے مالیت کی الیکٹرانک اشیاء جن میں ریفریجریٹرم فریزر، واٹر پمپ بلب، ٹیوب لائٹس، ہیٹر، ٹیلی ویزن، گیزر، اسٹیبلائیزر شامل ہیں جل گئے ہیں بجلی کی ٹرپنگ کے ساتھ ہی وولٹیج اچانک بڑھ جاتے ہیں جس کی وجہ سے الیکٹرانک اشیاء جل جاتی ہیں بجلی کی سپلائی میں ٹرپنگ کا سلسلہ گزشتہ کئی روز سے جاری ہے معلوم ہو اہے کہ اس ٹرپنگ کے باعث پنگریو گرڈ اسٹیشن کی کروڑوں روپے مالیت کی او سی بی اور دیگر قیمتی تنصیبات کو بھی نقصان پہنچ رہا ہے جس کی وجہ سے یہ تنصیبات بھی جل جانے اور ان میں فنی خرابیاں پیدا ہو نے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے علاقے میں سولہ تا اٹھارہ گھنٹوں تک ہو نے والی بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے ساتھ ساتھ اب اچانک اور بار بار ہو نے والی ٹرپنگ کے باعث ہو نے والے نقصان نے حیسکو صارفین کو مشتعل کر

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

24/12/2014 - 23:19:09 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان