مولانا سمیع الحق کی مذاکراتی عمل سے دستبرداری سے طالبان کے موقف کی تائید ہوتی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 23/01/2014 - 21:27:43 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 21:27:43 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 21:20:07 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 21:20:07 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 21:05:04 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 21:05:04 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 20:41:20 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 20:41:20 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:47:41 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:31:32 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:30:56
پچھلی خبریں - مزید خبریں

پشاور

مولانا سمیع الحق کی مذاکراتی عمل سے دستبرداری سے طالبان کے موقف کی تائید ہوتی ہے، کالعدم تحریک طالبان پاکستان

پشاور(رحمت اللہ شباب۔اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔23 جنوری ۔2014ء)کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے اپنے جاری بیان میں کہا ہے کہ مولانا سمیع الحق کی مذاکراتی عمل سے دستبرداری سے طالبان کے موقف کی تائید ہوتی ہے۔مرکزی ترجمان شاہد اللہ شاہد کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق کالعدم تحریک طالبان کے ساتھ مذاکرات سے متعلق اے پی سی کے انعقاد کے بعد حکومت نے مذاکرات سے متعلق پرزور بیانات کاسلسلہ جاری رکھااور عملا مذاکرات شروع کرنے سے مکمل اجتناب برتا گیا، عوام کو دھو کا دینے کے لئے علماء کرام کو متحرک کرنے کا ڈھنڈورا پیٹا گیا اور ان سے منسوب ایک بیان بھی جاری کروایا گیا( اس بیان کی حقیقت کیا تھی ؟ہم ا چھی طرح اس سے آگاہ ہیں)، اسی دوران مسلسل طالبان کی سخت شرائط کا پروپیگنڈہ بھی کیا گیا ۔

ابھی کچھ عرصے سے پھر حکومتی وزرا کالعدم تحریک طالبان کے بارے میں پورے شد ومد سے مذاکرات سے انکار کا پروپیگنڈہ کر رہے ہیں،جبکہ تحریک طالبان کا اس حوالے سے موقف شروع دن سے ہی نہایت واضح ہے کہ ہم مذاکرات کے لئے تیار ہیں لیکن حکومت اپنا اختیار اور اخلاص ثابت کرے ۔ماضی کے ناکام معاہدوں کی بنیادی وجہ حکومتوں کا بے اختیار اور اور غیر سنجیدہ ہونا ہی تھا، ہم اس حکومت کا بھی اصل اختیار انہی ہاتھوں میں سمجھتے ہیں جنہوں نے پورے ملک کو ایک فون کال پر ڈھیر ہو کر امریکہ کے حوالے کیا تھا،جنہوں نے لال مسجد کو معصوم طالبات کے خون سے رنگین کیااور سوات ووزیرستان سمیت ملک بھر میں اسلام سے محبت رکھنے والوں کو آتش وآہن کی سزا دی۔

اگر حکومت مخلص اور با اختیار ہوتی تو عین مذاکراتی عمل کے دوران مولانا ولی الرحمن اور امیر محترم حکیم اللہ مسعود کی شہادتوں کے واقعات کبھی پیش نہ آتے، بات در اصل یہ ہے کہ اس ملک میں ہمیشہ نادیدہ قوتوں کی حکمرانی رہی ہے ،جو کبھی اسلام اورملک کے وفادار نہیں رہے، ملک کے منتخب حکمران بھی

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

23/01/2014 - 21:05:04 :وقت اشاعت