کراچی ،سانحہ مستونگ کیخلاف شیعہ تنظیموں کی اپیل پر 15مقامات پر احتجاجی دھرنے جاری ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:29:13 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:29:13 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:27:31 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:27:31 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:17:26 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:17:26 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:14:33 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:14:33 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:14:33 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:13:16 وقت اشاعت: 23/01/2014 - 19:13:16
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

کراچی ،سانحہ مستونگ کیخلاف شیعہ تنظیموں کی اپیل پر 15مقامات پر احتجاجی دھرنے جاری ،احتجاجی دھرنوں کے باعث شہر میں بدترین ٹریفک جام ،معمولات زندگی درہم برہم ،کارگو کی ترسیل کا نظام اور فلائٹوں کا شیڈول متاثر ،دہشت گرد کھلے عام کارروائیاں کررہے ہیں ،حکومت سوئی ہوئی ہے، ملک میں نواز شریف کی نہیں طالبان کی حکومت ہے ،علمائے کرام کا دھرنوں سے خطاب

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔23 جنوری ۔2014ء)سانحہ مستونگ میں جاں بحق ہونے والے افراد سے اظہار یکجہتی اور اہل تشیع افراد کی ٹارگٹ کلنگ کے خلاف مجلس وحدت مسلمین اور دیگر شیعہ تنظیموں کی اپیل پر کراچی کی مختلف شاہراؤں پر 15مقامات پر احتجاجی دھرنے دوسرے روز بھی جاری رہے ۔احتجاجی دھرنوں کے باعث شہر میں بدترین ٹریفک جام دیکھنے میں آیا جبکہ معمولات زندگی درہم برہم ہوگئے ہیں ۔

پبلک ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی اور اہم مقامات پر دھرنوں کے باعث سرکاری اور نجی دفاتر میں حاضری معمول سے کم رہی اور صبح کھلنے والے بیشتر اسکولوں میں چھٹی کردی گئی ۔دھرنوں کے باعث کارگو کی ترسیل کا نظام اور فلائٹوں کا شیڈول متاثر ہوا اور سیکڑوں مسافر ایئرپورٹ پر پھنسے رہے ۔مجلس وحدت مسلمین کے رہنماوٴں نے اعلان کیا ہے کہ جب تک سانحہ مستونگ میں ملوث ملزمان کو گرفتار نہیں کیا جاتا اور دہشت گردوں کے خلاف فوجی کارروائی نہیں کی جاتی احتجاجی دھرنے جاری رہیں گے ۔

تفصیلات کے مطابق مستونگ میں زائرین کو نشانہ بنانے اور 24افراد کی شہادت پرکوئٹہ میں شہداء کے لواحقین کے میتوں کے ہمراہ احتجاجی دھرنے سے اظہار یکجہتی کے لیے مجلس وحدت مسلمین اور دیگر شیعہ تنظیموں کی جانب سے ملک بھر کی طرح کراچی میں نمائش چورنگی ،انچولی ،عائشہ منزل ،رضویہ سوسائٹی ،ملیر جعفر طیار ،فائیور اسٹار چورنگی نارتھ ناظم آباد ،نیپا چورنگی ،صفورا گوٹھ ،گلستان جوہر ،عباس ٹاوٴن،کلفٹن تین تلوار،جوہر مو ڑ سمیت 15سے زائد مقامات پر احتجاجی دھرنے جاری ہیں اور دھرنے کے شرکاء گزشتہ دو روز سے سڑکوں پر کھلے آسمان تلے بیٹھے ہیں ۔

دھرنے میں خواتین اوربچوں کی بھی ایک بڑی تعداد موجود ہے ۔دھرنوں کے باعث پولیس نے ایم اے جناح روڈ ،شاہراہ فیصل ،شاہراہ پاکستان سمیت اہم شاہراہوں کو عام ٹریفک کے لیے بند کردیا ہے ۔دھرنوں کے باعث جمعرات کو شہری زندگی کا نظام کا مکمل طور پر درہم برہم ہوگیا ۔تمام اہم شاہراہوں پر بدترین ٹریفک جام دیکھنے میں آیا ۔ٹریفک جام کے باعث متبادل روٹس پر گاڑیوں کی طویل قطاریں دیکھنے میں آئیں ۔

دھرنوں کے باعث شاہراہ فیصل ،ایم جناح روڈ ،نیو پریڈی اسٹریٹ ،یونیورسٹی روڈ ،نیشنل ہائی وے ،لیاقت آباد سمیت دیگر شاہراہوں پر عام گاڑیوں سمیت ایمبولینسیں بھی پھنسی رہیں ،جس کی وجہ سے مریضوں کا اسپتال منتقل کرنے میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔شہر میں دھرنوں کے باعث جمعرات کی صبح اسکول جانے والے بچوں کو بھی شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور اسکول وینز ٹریفک جام میں پھنسنے کے باعث بیشتر تعلیمی اداروں حاضری معمول سے کم دیکھنے میں آئی اور کئی تعلیمی اداروں میں صبح کے اوقات میں ہی چھٹی کردی گئی ۔



اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

23/01/2014 - 19:17:26 :وقت اشاعت