عدلیہ اب اتنی مضبوط ہے کہ آمریت کاکوئی امکان نہیں ہے،چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:55:28 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:55:28 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:54:03 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:54:03 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:54:03 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:43:11 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:43:11 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:41:51 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:41:51 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:41:51 وقت اشاعت: 22/01/2014 - 21:40:24
پچھلی خبریں - مزید خبریں

پشاور

عدلیہ اب اتنی مضبوط ہے کہ آمریت کاکوئی امکان نہیں ہے،چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ ،آزاد عدلیہ نے بڑے مشکل دور میں سخت ترین فیصلے دئیے ہیں ،تسلسل آئندہ بھی چلتا رہے گا،جسٹس دوست محمدخان کاتقریب سے خطاب

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔22 جنوری ۔2014ء)پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس دوست محمد خان نے کہا ہے کہ عدلیہ اب اتنی مضبوط ہے کہ آمریت کاکوئی امکان نہیں ہے، عدلیہ کی بحالی کے لئے وکلاء نے جان ومال کی قربانیاں دیں ،آزاد عدلیہ نے بڑے مشکل دور میں سخت ترین فیصلے دئیے ہیں اور یہ تسلسل آئندہ بھی چلتا رہے گا۔ان خیالات کا اظہار خیبر پختونخوا بار کونسل کی جانب سے ان کے اعزازمیں دی جانے والی الوداعی اور پشاور ہائی کورٹ کے نامزد چیف جسٹس فصیح الملک کے اعزاز میں دی جانے والے ویلکم پارٹی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ دوست محمد خان نے کہا کہ عدلیہ کی بحالی کے لئے وکلاء نے نہ صرف جان ومال کی قربانیاں دیں بلکہ وکلاء کو زندہ جلایا گیا اور دھماکوں سے اڑا یا گیا لیکن تحریک پاکستان کے بعد وکلاء نے سب سے بڑی تحریک چلا کر عدلیہ کو بحال کرایا اور عدلیہ کی بحالی کے بعد عوام کااس پر اعتماد بڑھ گیا ہے اس لئے لوگ عدالتوں کا رخ کررہے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ درج مقدمات کی شرح 200فیصد سے تجاوز کر گئی ہے چیف جسٹس نے کہا کہ آزاد عدلیہ نے بڑے مشکل دور

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

22/01/2014 - 21:43:11 :وقت اشاعت